The news is by your side.

Advertisement

مسلمانوں کے خلاف ہرزہ سرائی، نیتن یاہو کے بیٹے کا فیس بُک اکاؤنٹ بند

یروشلم : فیس بُک انتظامیہ نے مسلمانوں کے خلاف ہرزہ سرائی کرنے پر اسرائیلی وزیر اعظم نیتن یاہو کے بیٹے ’یائر‘ کا اکاؤنٹ عارضی طور پر بند کردیا۔

تفصیلات کے مطابق غاصب صیہونی ریاست اسرائیل کے نسل پرست وزیر اعظم نیتن یاہو کے بڑا بیٹا ’یائر‘ مسلمانوں کے خلاف نفرت انگیز بیان دینے سے باز نہ آیا، یائر نے مسلمانوں کے خلاف زبان کو جنبش دیتے ہوئے کہا کہ ’اسرائیل میں اس وقت امن قائم ہوگا جب مسلمان یہاں سے جائیں گے‘۔

نسل پرست ’یائر‘ نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ پر عوام سے رائے مانگتے ہوئے کہا کہ ’اسرائیل میں اس وقت امن قائم ہوگا جب تمام ’یہودی‘ یہاں سے چلے جائیں‘ یا ’تمام مسلمان اسرائیل سے نکل جائیں‘۔

اسرائیلی وزیر اعظم کے بیٹے نے شرانگیزی کرتے ہوئے کہا کہ میں دوسرے آپشن کا انتخاب کروں گا، ’تمام مسلمان اسرائیل سے چلے جائیں تاکہ یہاں امن قائم ہو‘۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کا کہنا تھا کہ نیتن یاہو کے بیٹے کی جانب سے کی گئی شر انگیزی پر سخت رد عمل کے اظہار کے بعد فیس بُک انتظامیہ نے پوسٹ ڈیلیٹ کردی۔

نیتن یاہو کے بیٹے نے اپنی پوسٹ میں مزید تحریر کیا تھا کہ ’جاپان اور آئس لینڈ میں دہشت گردانہ کارروائیاں نہ ہونے وجہ وہاں مسلمانوں کی آبادی نہ ہونا ہے‘۔

واضح رہے کہ ’یائر‘ نے پہلی مرتبہ مسلمانوں کی دل آزاری نہیں کی بلکہ وہ اس سے قبل بھی عوامی سطح پر مسلمانوں کی توہین کرچکا ہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں