The news is by your side.

Advertisement

فلسطینی لڑکی کو مسجد اقصیٰ پر حملے کے خلاف احتجاج پر گولیاں مار دی گئیں

غزہ: اسرائیلی فورسز نے ایک بار پھر رات کے اندھیرے میں غزہ کے محصور فلسطینیوں پر جارحیت کی ہے۔

تفصیلات کے مطابق اسرائیل نے رات کے اندھیرے میں غزہ پر جارحیت کی ہے، اسرائیلی طیاروں نے غزہ کی پٹی کے جنوبی علاقے پر مزائل داغے، مغربی کنارے میں صہیونی فورسز نے ایک بار پھر دھاوا بول کر شدید فائرنگ کی، جس سے 17 سالہ ایک لڑکی شہید اور 2 فلسطینی زخمی ہو گئے۔

فلسطینی لڑکی کو مسجد اقصیٰ پر حملے کے خلاف احتجاج پر گولیاں ماری گئیں، اسرائیلی فوجیوں نے ایک ہفتے کے دوران 4 فلسطینی خواتین کو شہید کر دیا ہے۔

مقامی میڈیا اور عینی شاہدین کا کہنا ہے کہ کئی مہینوں میں اس طرح کا یہ پہلا حملہ ہے جو مسجد اقصیٰ پر اسرائیلی فورسز کی جانب سے دھاوا بولنے کے بعد ہوا ہے، جس پر فلسطینی شدید احتجاج کر رہے ہیں۔

حماس کی مسلح شاخ عزالدین القسام بریگیڈز نے ایک بیان میں کہا ہے کہ انھوں نے زمین سے فضا میں مار کرنے والے میزائلوں سے جوابی کارروائی کی، بیان میں کہا گیا کہ ہمارے فضائی دفاع نے منگل کی صبح زمین سے فضا میں مار کرنے والے میزائلوں سے غزہ کی پٹی کے آسمان میں صہیونی جنگی طیاروں کا بھرپور جواب دیا۔

دوسری جانب مسجد اقصیٰ کے احاطے میں جھڑپوں کے بعد فلسطین، اسرائیل کشیدگی میں تیزی دیکھی جا رہی ہے، مسجدِ الاقصیٰ کے احاطے میں تشدد کا آغاز جمعہ کو علی الصبح ہوا تھا اور اس میں اب تک 170 سے زیادہ افراد زخمی ہو چکے ہیں، جن میں زیادہ تر فلسطینی ہیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں