site
stats
عالمی خبریں

امریکی صدر کی بیٹی ایوانکا ٹرمپ اے آر رحمان کی مداح نکلی

نئی دہلی : آسکر ایوارڈ یافتہ اے آر رحمان کے جہاں دنیا بھر میں لاکھوں مداح ہے وہیں امریکی صدر کی بیٹی ایوانکا ٹرمپ بھی ان کی مداح نکلی۔

تفصیلات کے مطابق امریکی صدر ٹرمپ کی بیٹی ایوانکا ٹرمپ گلوبل انٹرپرینرشپ سمٹ میں شرکت کے لئے بھارت کا دورہ کریں گے، جو 28 نومبر سے 30 نومبر تک جاری رہے گی۔

امکان ظاہر کیا جارہا ہے کہ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی صاحبزادی اے آر رحمان کے حیدرآباد میں ہونے والے کنسرٹ ” اے آر رحمان انکور” میں شرکت کریں گی۔

 

ذرائع کے مطابق ایوانکا ٹرمپ نے کنسرٹ میں شرکت کیلئے دلچسپی ظاہر کی ہے، منتظمین کا کہنا ہے کہ اگر ایوانکا ٹرمپ نے کنسرٹ میں شرکت کی تو سخت سیکیورٹی کے اقدامات کریں گے اور اس پر کوئی سمجھوتہ نہیں کیا جائے گا۔

اے آر رحمان کے کنسرٹ میں نہ صرف حیدر آباد بلکہ دوسرے شہروں سے 30 ہزار سے زائد شائقین شرکت کریں گے۔

خیال رہے کہ اے آر رحمان تقریبا 5 سال بعد بھارت میں اپنے فن کا مظاہرہ کریں گے، جس میں انکے موسیقی کی دنیا میں 25 سال مکمل ہونے کا جشن منایا جائے گا۔

میوزک کنسرٹ 26 نومبر کو حیدرآباد دکن سے شروع ہوگا جبکہ اس کے علاوہ کنسرٹ 4 مختلف شہروں میں منعقد کیے جائیں گے، جس میں احمد آباد ، نئی دہلی اور ممبئی شامل ہیں۔

جب اے آر رحمان کی ٹیم سے رابطہ کرکے ایوانکا کی کنسرٹ میں شرکت کے بارے میں پوچھا گیا تو انھوں نے اس بات کی تصدیق نہیں کی اور کہا کہ ہمیں اس بارے میں کچھ علم نہیں۔

اندورنی ذرائع کے مطابق ایوانکا ٹرمپ جنہیں بھارتی ثقافت اور فنونِ لطیفہ نے مبہت کررکھا ہے، وہ بھارت کا سیاحتی دورہ کرنے کا منصوبہ بھی رکھتی ہیں، ایوانکا چار مینار ، لاڈ بازار اور چارہلا محل محل کا دورہ کریں گے۔

نریندر مودی ایوانکا ٹرمپ کے لیے 28 نومبر کو فلک نومہ محل میں پرتعیش عشائیے کا اہتمام بھی کریں گے۔


مزید پڑھیں : دورہ جاپان، امریکی صدر کی بیٹی ایوانکا ٹرمپ کے لباس پر تنقید


یاد رہے چند روز قبل ایوانکا جاپان کے دورے میں توجہ کا مرکز بنی رہی تھی، ان کے اسٹائل اور ڈریسنگ پر بھی جاپان میں بحث شروع ہوگئی تھی۔

سیمینار میں پہنے گئے لباس پر ایوانکا کو کڑی تنقید کا سامنا کرنا پڑا تھا۔


اگر آپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اور اگر آپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی فیسبک وال پر شیئر کریں۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top