The news is by your side.

Advertisement

بلوچستان: حکومت سازی کے لیے جوڑ توڑ، بی این پی نے جام کمال سے ہاتھ ملا لیا

کوئٹہ: بلوچستان میں حکومت سازی کے لیے کوششیں تیز ہوگئیں، بی این پی نے جام کمال سے ہاتھ ملا لیا۔

تفصیلات کے مطابق بی این پی نے بلوچستان عوامی پارٹی کے صدر جام کمال کی حمایت کا اعلان کر دیا.

رہنما بی این پی کہتے ہیں کہ حکومت میں شامل ہونے کے لیے کوئی شرائط نہیں رکھیں، جام کمال ہمارے قائد ایوان ہوں گے۔

جام کمال کا موقف

اس ضمن میں‌ جام کمال کا کہنا ہے کہ آزاد اوراتحادی جماعتوں کے ساتھ سادہ اکثریت حاصل ہوچکی ہے.

انھوں نے کہا کہ ہم نے مرکز میں پی ٹی آئی کی غیرمشروط حمایت کااظہارکیا، پی ٹی آئی اور بلوچستان نیشنل پارٹی مینگل کے ساتھ رابطہ کیا ہے.

جام کمال کا کہنا ہے کہ کوشش ہے اکثریت میں اضافہ کریں تاکہ مضبوط حکومت بنے، وزارت اعلیٰ کی نامزدگی کے لئے پارٹی میں مشاورت جاری ہے.

واضح رہے کہ بلوچستان میں بی اے پی 15 نشستوں کے ساتھ سرفہرست ہے جب کہ ایم ایم اے 9 نشستوں کے ساتھ دوسرے، بی این پی مینگل 6 نشستوں کے ساتھ تیسرے اور آزاد امیدواروں نے بھی 5 نشستیں حاصل کی ہیں۔


بلوچستان میں حکومت بنانے کا حق ہے، وفاق ساتھ دے، جام کمال


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں۔ مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کے لیے سوشل میڈیا پر شیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں