تازہ ترین

جہاز پر موجود پاکستانیوں کی موجودگی، حکومت کا ایران سے رابطہ

ایرانی افواج کی جانب سے قبضے میں لیے گئے...

’کچھ سیاستدان دوبارہ سازش تیار کر رہے ہیں‘

چیئرمین پیپلزپارٹی بلاول بھٹو زرداری نے کہا کہ سازشی...

پاکستان کا مشرق وسطیٰ کی صورتحال پر گہری تشویش کا اظہار

پاکستان نے مشرق وسطیٰ کی صورتحال پر گہری تشویش...

ایران کا درجنوں ڈرونز اور کروز میزائلز سے اسرائیل پر حملہ

ایران نے شام میں ایرانی قونصل خانے پر حملے...

سیکیورٹی فورسز کا بونیر میں آپریشن، دہشت گرد سلیم عرف ربانی مارا گیا

سیکیورٹی فورسز کی جانب سے بونیر میں انٹیلی جنس...

فرانس نے جمال خاشقجی قتل کیس میں گرفتار شخص کو رہا کردیا

پیرس/ریاض/انقرہ : فرانسیسی حکام نے جمال خاشقجی کے قتل کے الزام میں گرفتار مشتبہ شخص کو رہا کردیا۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کی رپورٹ کے مطابق سعودی عرب سے تعلق رکھنے والے مقتول صحافی جمال خاشقجی کے بہیمانہ قتل میں ملوث ملزم خالد الاوطیبی کو فرانس کے چارلس دی گولے ایئرپورٹ سے دو روز قبل گرفتار کیا گیا تھا۔

فرانسیسی حکام نے مشتبہ شخص کی گرفتاری غلط معلومات کا نتیجہ نکلی، مشتبہ شخص سے متعلق فرانسیسی حکام کو خیال تھا کہ وہ جمال خاشقجی کو قتل کرنے والے 26 افراد میں سے ایک خالد الاوطیبی ہے۔

فرانسیسی حکام کی جاری کردہ رپورٹ میں کہا گیا تھا کہ 33 سالہ شخص سابق سعودی شاہی گارڈ رہ چکا ہے جو عدالتی حراست تھا اور اپنے اصل نام سے سفر کررہا تھا۔

واضح رہے کہ صحافی جمال خاشقجی سعودی حکومت باالخصوص ولی عہد محمد بن سلمان کے شدید ناقد تھے جنہیں اکتوبر 2018 میں استنبول میں واقع سعودی سفارت خانے میں بےدردی سے قتل کرکے لاش کو تیزاب میں ڈال دیا تھا۔

سعودی صحافی جمال خاشقجی قتل میں ملوث ایک ملزم گرفتار

جمال خاشقجی کے قتل سے متعلق سعودی حکومت نے کہا تھا کہ جاسوسوں کی ایک ٹیم واشنگٹن پوسٹ سے وابستہ صحافی کو ریاست واپس لانے کےلیے گئی تھی تاہم آپریشن کے دوران انہوں نے خاشقجی کو قتل کردیا لیکن ترکش حکام نے کہا تھا کہ جاسوسوں نے صحافی کو سعودی حکومت کے اعلیٰ حکام کے حکم پر قتل کیا تھا۔

Comments

- Advertisement -