spot_img

تازہ ترین

امریکا وزیراعظم شہباز شریف کیساتھ مشترکہ مفادات آگے بڑھانے کا خواہاں

واشنگٹن : امریکی محکمہ خارجہ کے ترجمان میتھو ملر...

وزیراعلیٰ کے پی آج اڈیالہ جیل میں بانی پی ٹی آئی سے ملاقات کریں گے

وزیراعلیٰ خیبر پختونخوا علی امین گنڈاپور آج اڈیالہ جیل...

الیکشن کمیشن نے سنی اتحاد کونسل کی مخصوص نشستوں کی درخواست مسترد کردی

اسلام آباد: الیکشن کمیشن نے سنی اتحاد کونسل کی...

شہباز شریف نے وزیراعظم کےعہدے کا حلف اٹھالیا

اسلام آباد : شہباز شریف نے وزیراعظم کےعہدے کا...

بلاول بھٹو کی ‘چھ چھ مرتبہ منتخب ہونے والے بزرگوں’ سے اپیل

اسلام آباد : چیئرمین پیپلز پارٹی بلاول بھٹو نے...

جاپان نے ویزے جاری کرنے کا اعلان کردیا

ٹوکیو : کینیڈا کے بعد جاپان کی حکومت نے بھی ڈیجیٹل شعبے سے تعلق رکھنے والے دنیا بھر کے فری لانسرز کے لیے ویزا متعارف کرانے کا اعلان کیا ہے۔

اس اقدام کے بعد آئی ٹی پروفیشنلز کے لیے اپنے بیوی بچوں کو جاپان لانا اور بھی آسان ہوجائے گا، ٹریول اینڈ لیزیور ایشیا کی ایک رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ جاپانی حکومت مارچ 2024 سےخصوصی ویزا متعارف کروا رہی ہے، جس سے آئی ٹی انجینئرز اور اس صنعت کے دیگر کارکن آسانی سے جاپان آسکیں گے۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کی رپورٹ کے مطابق صرف وہ لوگ جن کی سالانہ آمدنی $67,340 سے زیادہ یعنی ¥10ملین جاپانی ین ہے اس ویزا کے لیے درخواست دے سکتے ہیں۔

اس ویزا کے لیے درخواست دہندگان کو کسی کمپنی میں ملازمت کرنے کی ضرورت نہیں ہے، سیلف ایمپلائڈ اور فری لانسرز کے لیے یہ ایک اچھا موقع ہے۔

visas

اس پروگرام کے تحت ان ممالک کے شہری جن کے ساتھ جاپانی حکومت کا ٹیکس ٹریٹی یا ویزا سے استثنیٰ کی حیثیت کا معاہدہ ہے وہ بھی ویزا کی درخواست جمع کروا سکیں گے۔

ویزا حاصل کرنے کے بعد غیرملکی ٹیک ورکرز 6 ماہ تک آزادانہ یا بغیر ملازمت کے کام کر سکتے ہیں، فی الحال، ایسا ویزا جاپان میں تین ماہ کے قیام کی اجازت دیتا ہے۔

فری لانسرز سے مراد وہ لوگ ہیں جو صرف مختصر یا وسط مدت کے لیے کسی ایک جگہ پر رہتے ہوئے دور سے کام کرتے ہیں، 49 ممالک اور دیگر علاقوں سے تعلق رکھنے والے اس مخصوص ویزا کے زمرے کے تحت جاپان میں رہ سکیں گے اور خود ملازمت والے درخواست دہندگان بھی اس کے اہل ہیں۔

Comments

- Advertisement -