The news is by your side.

Advertisement

جاپان کو مسلسل دسویں ماہ تجارتی خسارہ، کرنسی گراوٹ کا شکار

ٹوکیو: دنیا کی بڑی معیشتوں میں شمار کئے جانے والے جاپان تجارتی خسارہ سے پریشان ہوگیا ہے۔

جاپانی وزارت خزانہ کا کہنا ہے کہ توانائی کی بڑھتی ہوئی قیمتیں مئی میں بھی جاپان کے تجارتی توازن پر اثر انداز رہیں، جس کے باعث درآمدی مالیت میں اضافہ ہوا، اور مسلسل دسویں ماہ جاپان تجارتی خسارے کا شکار رہا۔وزرات خزانہ نے بتایا کہ گزشتہ ماہ تجارتی خسارے کی مالیت تقریباً 24 کھرب ین یا 18 ارب ڈالر تھی جس کی وجہ خام تیل کی قیمتوں میں اضافہ، مائع قدرتی گیس کا مہنگا ہونا اور اس کے ساتھ ساتھ کوئلے کی درآمدی مالیت تین گنا سے زائد ہونا ہے۔

یہ بھی پڑھیں: امریکی ڈالر نے بلندیوں کا نیا ریکارڈ قائم کر دیا

وزارت خزانہ کی جانب سے بتایا گیا کہ درآمدی مالیت میں ین کے لحاظ سے ایک سال کے دوران 49 فیصد اضافہ ہوا، جس کے باعث درآمدی مالیت کو پہلی بار 90 کھرب ین سے زائد یا تقریباً 67 ارب ڈالر تک لے جایا گیا، نیتجے کے طور پر ین کی قدر کمزور ہوتی چلی گئی۔

معاشی ماہرین کا کہنا ہے کہ دوسری جانب برآمدات میں 16 فیصد اضافہ ہوا، اس میں فولاد اور سیمی کنڈکٹرز کی ترسیلات بڑھنے کا جزوی کردار رہا، انہوں نے خبردار کیا ہے کہ روس یوکرین جنگ کے باعث توانائی کی قیمتیں بلند رہنے اور ین کی قدر میں کمی کی وجہ سے جاپان کا تجارتی توزان طویل عرصے تک خسارے میں رہ سکتا ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں