The news is by your side.

Advertisement

نئے وزیر اعظم برطانیہ نے وزیر خارجہ جیرمی ہنٹ کو فارغ کر دیا

لندن: نئے وزیر اعظم بورس جانسن نے برطانیہ کی وزارت عظمیٰ کا منصب سنبھالتے ہی وزیر خارجہ جیرمی ہنٹ کو فارغ کر دیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق نئے برطانوی وزیر اعظم نے اپنے حریف جیرمی ہنٹ کو وزارت خارجہ کے کلیدی عہدے سے سبک دوش کر دیا۔

بورس جانسن نے جیرمی ہنٹ کی جگہ ڈومینک راب کو نیا وزیر خارجہ مقرر کر دیا ہے، نوٹیفکیشن کے مطابق راب برطانیہ کے نئے وزیر خارجہ ہوں گے۔

برطانوی وزیر اعظم نے پریتی پٹیل کو وزیر داخلہ تعینات کر دیا، جب کہ سابق برطانوی وزیر داخلہ ساجد جاوید کو چانسلر کی ذمہ داری دے دی گئی ہے۔

قبل ازیں نئے وزیر اعظم بورس جانسن نے بریگزٹ سے متعلق بھی اعلان کر دیا تھا کہ برطانیہ 31 اکتوبر کو یورپ سے نکل جائے گا، ان کا کہنا تھا کہ بریگزٹ پر تنقید کرنے والے غلط ہیں۔

یہ بھی پڑھیں:  نومنتخب برطانوی وزیراعظم کو عہدہ سنبھالتے ہی مشکلات کا سامنا

واضح رہے کہ آج وزیر اعظم بننے کے لیے بورس جانسن جب ملکہ برطانیہ سے اجازت لینے کے لیے بکنگھم پیلس گئے تو راستے میں ان کے قافلے کو مظاہرین نے ہاتھوں کی زنجیر بنا کر کچھ دیر کے لیے روک دیا تھا جس سے عوام میں ان کی عدم مقبولیت کا پتا چلتا ہے۔

قائد حزب اختلاف جیرمی کوربن بھی نئے وزیر اعظم پر تنقید کر چکے ہیں، انھوں نے کہا تھا کہ بورس جانسن کو ان کے پارٹی ممبرز نے منتخب کیا ہے، عوام نے نہیں۔

خیال رہے کہ بورس جانسن کا نام کنزرویٹو پارٹی نے بہ طور نئے برطانوی وزیراعظم پیش کیا تھا، بورس جانسن کو پارٹی کے 66.4 ممبران نے ووٹ دیے جس کے بعد وہ ٹوری پارٹی کے نئے چیئرمین ہو گئے۔

بورس جانسن کے وزیر اعظم بننے کے بعد چند وزرا نے خود استعفیٰ پیش کر دیا ہے جن میں فارن آفس منسٹر سر الان ڈنکین، وزیر تعلیم اینی ملٹن، چانسلر پلپ ہموند اور جسٹس سیکرٹری ڈیوڈ گوئیکے شامل ہیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں