قوانین میں نہیں طریقہ کارمیں تبدیلی کی ضرورت ہے، جسٹس آصف سعید کھوسہ -
The news is by your side.

Advertisement

قوانین میں نہیں طریقہ کارمیں تبدیلی کی ضرورت ہے، جسٹس آصف سعید کھوسہ

لاہور : سپریم کورٹ کے سینئرجج جسٹس آصف سعید کھوسہ نے کہا ہے کہ جلد انصاف کی فراہمی کیلئے قوانین میں نہیں طریقہ کار میں تبدیلی کی ضرورت ہے، قانون درست ہے طریقہ کار میں تبدیلی کرنا ہوگی۔

ان خیالات کا اظہار انہوں نے لاہورمیں سیمینارسےخطاب کرتے ہوئے کیا۔ اپنے خطاب میں جسٹس آصف سعید کھوسہ نےجلد انصاف کی فراہمی کا فارمولا بتادیا۔

جسٹس کھوسہ نے کاکہنا کہ تفتیشی افسر واردات کے بعد موقع پر شہادتیں ختم ہونے کے بعد پہنچتا ہے۔ اس کے بعد ملزم کے اہل خانہ بھائیوں والدین اورخواتین کا خانہ خراب کردیا جاتا ہے۔ پولیس مدعیان کو خوش کرنے کیلئے گرفتاری تو کرتی ہے، صرف اصل ملزم کو حراست میں لیا جانا چاہئے۔

انہوں نے کہا کہ پولیس قوانین کے تحت کسی کی آزادی کو ختم نہیں کیا جاسکتا۔ اگرکیس کا فوری اندراج کر کے گرفتاری کے اگلے روز ملزم کو عدالت میں پیش کیا جائے تو تیز انصاف میں مدد ملے گی۔

جسٹس کھوسہ کا کہنا تھا کہ موجودہ حالات میں تیزی سے انصاف فراہم کیا جاسکتا ہے۔ قتل کے مقدمات میں بھی جلد فیصلہ ممکن ہے۔ ججز فیصلےکریں ہائیکورٹ اورسپریم کورٹ کی سطح پرسہولتیں دیں گے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں