The news is by your side.

Advertisement

کابل ایک بار پھر زوردار دھماکے سے گونج اٹھا، ہلاکتیں

کابل: افغانستان کے دارالحکومت میں قائم مسجد کو شدت پسندوں نے نشانے پر لے لیا، زوردار دھماکے کے نتیجے میں 4 افراد جاں بحق اور درجنوں زخمی ہوگئے۔

غیرملکی خبررساں ادارے کی رپورٹ کے مطابق کابل کی مسجد میں جمعے کی نماز کے دوران دھماکا ہوا جس کے باعث امام سمیت 4 نمازی جاں بحق ہوگئے، حکومت نے حملے کی تصدیق کردی ہے۔

افغان وزارت داخلہ کے ترجمان طارق ایرین کا کہنا ہے کہ دھماکا خیز مواد مقامی مسجد کے اندر نصب کیا گیا تھا، واقعے کے فوراً بعد قانون نافذ کرنے والے ادارے اور ریسکیو عملہ حرکت میں آیا اور علاقے کو گھیرے میں لے کر آپریشن کا آغاز کیا۔ تمام زخمیوں اور لاشوں کو اسپتال منتقل کردیا گیا ہے۔

افغانستان: مسجد میں دھماکا، امام شہید، 16 نمازی زخمی

حملے کی ذمے داری کسی شدت پسند تنظیم نے قبول نہیں کی تاہم اس سے قبل متعدد مساجد پر حملوں کی ذمے داری داعش قبول کرتی آئی ہے۔ حکومت کو شبہ ہے کہ اس شدت پسندانہ کارروائی میں بھی آئی ایس آئی ایس کا ہاتھ ہوسکتا ہے۔

رواں ماہ کے آغاز میں ہی کابل میں ایک اور مسجد کو نشانہ بنایا گیا تھا، ابتدائی تحقیقاتی رپورٹ میں کہا گیا تھا کہ شدت پسندوں کی جانب سے حملے کا مقصد امام کو قتل کرنا تھا کیوں کہ وہ امن مذاکرات میں طالبان کا حامی تھا۔

خیال رہے کہ یہ حملہ ایک ایسے وقت میں کیا گیا کہ جب طالبان اور افغان حکومت کے درمیان قربتیں بڑھ رہی ہیں، فریقین ایک دوسرے کے قیدیوں کو مرحلہ وار رہا بھی کررہے ہیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں