The news is by your side.

Advertisement

کراچی: ڈاکو کی فائرنگ سے جاں بحق شاہ رخ کے قتل کا مقدمہ

کراچی میں گھر کے باہر ڈکیتی مزاحمت پر شہری کے قتل کا مقدمہ درج ہوگیا، مقدمے میں صورت شناس ایک ملزم کو نامزد کیا گیا ہے۔

نئے سال کے ابتدائی 12 دن شہرقائد میں بسنے والوں پر بجلی بن کر گرے ہیں، ان 12 دنوں میں شہری نا صرف اپنے مال اور قیمتی املاک بلکہ جانوں سے بھی ہاتھ دھو بیٹھے۔

رپورٹ کے مطابق صرف ڈکیتی مزاحمت پر کراچی میں پانچ افراد کو موت کے گھاٹ اتارا گیا جب کہ 29 شہری ڈاکوؤں کی فائرنگ سے زخمی ہوئے۔

جنوری 2022 کے اوائل میں ڈکیتی مزاحمت پر مرنے والوں میں کراچی کے علاقے فیروز آباد پی ای سی ایچ ایس کا نوجوان شاہ رخ بھی شامل ہے، جسے گھر کے باہر ڈاکو نے گولی مار کر شادی کے اگلے روز ہی قتل کردیا گیا۔

شاہ رخ کے قتل کا مقدمہ مقتول کے بھائی جہانزیب کی مدعیت میں درجج کرلیا گیا ہے، جس میں صورت شناس ایک ملزم کو نامزد کیا گیا ہے۔

ایف آئی آر کے متن میں کہا گیا ہے کہ ملزم اسپتال سے لوٹنے والی بہن اور والدہ کے رکشے کے پیچھے گھر تک آیا اور رکشے سے اترنے پر ان سے لوٹ مار کی۔

اس دوران چھوٹا بھائی گھر سے نکلا تو ملزم نے بھائی پر فائرنگ کردی جس کے نتیجے میں وہ زخمی اور ملزم بہن سے دو چوڑیاں چھین کر موٹر سائیکل پر فرار ہوگیا۔

مدعی نے پولیس کو بتایا کہ شام کے وقت فون پر بھائی کو گولی لگنے کی اطلاع ملی، بھائی کو اسپتال لے گئے جہاں اس نے دم توڑ دیا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں