The news is by your side.

Advertisement

رشوت خور پولیس اہل کاروں نے 85 سالہ بزرگ ملزم کو بھی نہ بخشا

کراچی: اینٹی ٹیررازم کورٹ (اے ٹی سی) میں سیکورٹی پر تعینات پولیس اہل کاروں نے رشوت خوری کی حد کر دی، اہل کاروں نے 85 سالہ بزرگ ملزم شاہنواز کو بھی نہ بخشا۔

اے آر وائی نیوز کے مطابق انسداد دہشت گردی کی عدالت میں تعینات سیکورٹی اہل کاروں نے بزرگ کو بھی نہ چھوڑا، پچاسی سالہ ملزم شاہ نواز نے بتایا کہ ہر پیشی پر ان سے 500 سے ایک ہزار تک لیے جاتے ہیں، پولیس والے شناختی کارڈ اور موبائل جمع کرنے کے پیسے بھی وصول کرتے ہیں۔

بزرگ نے اے آر وائی نیوز کے نمایندے کو بتایا میں غریب آدمی ہوں، مجھ پر جھوٹا مقدمہ درج کیا گیا، ڈِیڑھ سال سے عدالتوں کے چکر کاٹ رہا ہوں، پیشی پر پیشی ہوتی ہے مگر انصاف نہیں ملتا۔

پولیس اہل کاروں کی رشوت خوری سے تنگ بزرگ بات کرتے آب دیدہ ہو گئے، انھوں نے کہا کہ آج بھی 500 روپے مانگ کر عدالت آیا ہوں۔

یہ بھی پڑھیں:  کراچی ایئر پورٹ : ایف آئی اے امیگریشن میں تعینات اے ایس آئی رشوت کے الزام میں معطل

یاد رہے کہ ستمبر میں کراچی ایئر پورٹ پر ایف آئی اے امیگریشن میں تعینات ایک اے ایس آئی نے بھی مسافر سے بھاری رشوت لی تھی جس پر اسے معطل کر دیا گیا تھا۔

اس حوالے سے ڈپٹی ڈائریکٹر امیگریشن زین شیخ نے اے آر وائی نیوز کو بتایا تھا کہ ہمیں شکایت ملی تھی کہ اے ایس آئی اے رانا اکبر نے عبدالشکور نامی مسافر سے 460 یو اے درہم رشوت وصول کی ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں