The news is by your side.

Advertisement

معاشی تنگ دستی، کراچی کا باصلاحیت نوجوان باکسر ہوٹل ویٹر بن گیا

کراچی: شہر قائد سے تعلق رکھنے والا باصلاحیت نوجوان باکسر معاشی تنگ دستی سے نبردآزما ہونے کے لیے ہوٹل پر ملازمت کرنے لگا۔

نمائندہ اے آر وائی سے گفتگو کرتے ہوئے ’کک باکسنگ‘ کے ماہر نثار خان نے بتایا کہ وہ نیشنل کک باکسنگ فلائی ویٹ چیمپئن رہ چکے ہیں۔

انہوں نے بتایا کہ وہ کراچی کے علاقے بلدیہ ٹاؤن میں واقع چوبیس کی مارکیٹ کے رہائشی ہیں، لاک ڈاون کی وجہ سے معاشی حالات خراب ہوئے تو مجبورا ہوٹل پر ویٹر کی ملازمت شروع کی۔

نوجوان نے بتایا کہ ’وہ اب ہوٹل آنے والوں کو چائے پیش کر کے، برتن اور صفائی کر کے دہاڑی بناتا ہے اور پھر اُن پیسوں سے گھر چلاتا ہے‘۔

نثار نے بتایا کہ وہ آل سندھ علامہ اقبال باکسنگ ٹورنامنٹ کا فاتح ہے اس کے علاوہ 52 کلوگرام فلائی ویٹ کیٹیگری کے کئی مقابلوں میں حصہ لے چکا ہے۔

حالات کے ہاتھوں مجبور نوجوان باکسر کا کہنا تھاکہ ’مجھ سے واقفیت رکھنے والے آرڈر دینے سے گھبراتے ہیں، جب کوئی مخالف ایتھلیٹس ہوٹل آجائے تو اُسے چائے پیش کرنے میں شرمندگی محسوس ہوتی ہے‘۔

نثار کا کہنا تھا کہ ’سندھ اسپورٹس بورڈ تعاون کرے تو مزید ٹائٹل جیت سکتا ہوں، میں بین الاقوامی سطح پر پاکستان کی نمائندگی کر کے ٹائٹل جیتنا چاہتا ہوں‘۔

Comments

یہ بھی پڑھیں