The news is by your side.

Advertisement

جامعہ کراچی طالبعلم ہراساں کیس ، 6 ملزمان کی ضمانت منظور

کراچی : جامعہ کراچی کے احاطے میں طالبعلم ہراساں کیس میں عدالت نے 6 ملزمان کی ضمانت منظور کرلی اور فی کس بیس ہزار روپے کے مچلکے جمع کرانے کا حکم دے دیا۔

تفصیلات کے مطابق سٹی کورٹ میں جوڈیشل مجسٹریٹ ایسٹ نے جامعہ کراچی کے احاطے میں طالبعلم کوہراساں کرنے کے کیس میں 6ملزمان کی ضمانت منظور کرلی اور ملزمان کو فی کس 20 ہزار روپے کے مچلکے جمع کرانے کا حکم دے دیا۔

تفصیلات کے مطابق کراچی سٹی کورٹ میں جوڈیشل مجسٹریٹ ایسٹ نے جامعہ کراچی کےاحاطے میں طالبعلم ہراساں کیس کی سماعت کی ، پولیس نے6ملزمان کو جوڈیشل مجسٹریٹ ایسٹ کےروبروپیش کیا، ملزمان میں فیضان، حماد علی، زوار،عبدالرحمان، عمیر،ذاکر شامل تھے۔

کراچی:پولیس کی جانب سے عدالت میں ملزمان کے ریمانڈ کی استدعا کی گئی ،وکیل صفائی نے کہا یہ ایف آئی آر نہیں بنتی، ہاسٹلز رات 7بجے بند ہو جاتے ہیں اور ملزم کی عمریں بھی کم ہیں۔

جس کے بعد عدالت نے فیضان، حماد علی، زوار، عبدالرحمان، عمیر اور ذاکر کی ضمانت منظور کرتے ہوئے ملزمان کو فی کس 20 ہزار روپے کے مچلکے جمع کرانے کا حکم دے دیا۔

یاد رہے کراچی یونیورسٹی انتظامیہ نے لڑکی کو ہراساں کرنے پر 6 لڑکوں کو پولیس کے حوالے کیا تھا،  پولیس کا کہنا  تھا  کہ آئی بی اے کا ایک طالبعلم اپنی دوست کو کراچی یونیورسٹی ڈراپ کرنے آیا تھا ، طالبعلم کی گاڑی میں 2 لڑکیاں تھیں جس میں سےایک کو ڈراپ کیا۔

واپسی پر یونیورسٹی کے رہائشی کچھ لڑکوں نے پیچھا کیا ، گاڑی کوراستےمیں روکنے کی کوشش کی اورغلط الفاظ کہے لیکن طالبعلم گاڑی تیزی سے بھگاتا ہوا وہاں سے نکل گیا۔

زیرحراست ملزمان میں ذاکر،عمیر،عبدالرحمان، فیضان، زوار، حماد شامل تھے،  جوکراچی یونیورسٹی کے رہائشی ہیں۔

بعد ازاں آئی بی اے طالب علم شہیر کی مدعیت میں کراچی یونیورسٹی میں لڑکی کو ہراساں کرنے کے واقعے کا مقدمہ درج کرلیا گیا تھا، ایف آئی آر میں کہا گیا  تھا کہ لڑکی کو جامعہ کے احاطے میں ہراساں کیا گیا جبکہ مقدمے میں راستے میں رکاوٹ، ہراساں اور نازیبا الفاظ کی دفعات بھی شامل کی گئیں تھیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں