The news is by your side.

Advertisement

بھارتی فوج کے افسران انسانی حقوق کی خلاف ورزی میں ملوث ہیں، رپورٹ

اسلام آباد: مقبوضہ کشمیر میں انسانی حقوق کی پامالیوں کے حوالے سے رپورٹ جاری کر دی گئی، بھارتی فوج کے 972 افسران انسانی حقوق کی خلاف ورزی میں ملوث پائے گئے ۔

بھارتی شہری کارتک مارک کوٹلا اور مقبوضہ کشمیر کے انسانی حقو ق کے کارکن خرم پرویز کی تیار کردہ رپورٹ کے مطا بق گزشتہ کچھ عرصہ کے دوران مقبوضہ کشمیر میں ایک ہزار سے زائد کشمیریوں کو ماورائے عدالت قتل جبکہ کشمیر ی لاپتہ کیئے گئے ۔

رپورٹ کے مطابق جرائم میں ملوث 972 افراد کے خلاف 333 مقدمات کا اندراج کیا گیا جبکہ 464 بھارتی فوجی، 158 پولیس اہلکا، 189 حکومتی گن مین ملزم ٹھہرائے گئے ۔

سنگین انسانی جرائم میں بھارتی فوج کے ایک میجر جنرل سات برگیڈیئراور اکتیس کرنلز سمیت پیر ا ملٹری فورس کے 54 سینئر آفیشلز بھی ملوث پائے گئے

۔رپورٹ کی لانچنگ تقریب سے خطاب میں وزیر اعظم آزاد کشمیر چوہدری عبدالمجید نے رپوٹ کو چشم کشا قرار دیتے ہوئے اقوام متحدہ اور عالمی اداروں سے نوٹس لینے کا مطالبہ کیا ۔

چوہدری عبدالمجید کاکہنا تھاکہ مسئلہ کشمیر کے حل کیلئے حق خود ارادیت کے علاوہ کوئی بھی حل قابل قبول نہیں ۔

ان کاکہنا تھاکہ بھارت خود مسئلہ کشمیر کو اقوام متحدہ میں لے گیا تھا مگر اب ان قراردادوں سے راہ فرار اختیار کر رہا ہے ۔

انھوں نے کہا کہ کشمیر کے مستقبل کا فیصلہ کشمیریوں کو کرنے دیا جانا چاہیئے اس کے علاوہ کسی آپشن کو تسلیم نہیں کیا جائے گا۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں