The news is by your side.

Advertisement

بے نامی اکاؤنٹس، کے ڈی اے ڈائریکٹر کے دورانِ تفتیش اہم انکشافات

کراچی: نیب ذرائع نے انکشاف کیا ہے کہ ایک روز قبل حراست میں لیے جانے والے کے ڈی اے کے ڈائریکٹر کے تانے بانے بھی بے نامی اکاؤنٹس سے ملنے لگے۔

تفصیلات کے مطابق کے ڈی اے ڈائریکٹر جمیل بلوچ کو ایک روز قبل نیب نے ملیر ندی کی 60 ایکڑ زمین پر قبضے اور ناجائز تعمیرات کے الزام پر حراست میں لیا تھا۔ نیب ذرائع کے مطابق جمیل بلوچ پرکےڈی اے کا ریکارڈ غائب اور ردوبدل کرنے جبکہ تعمیر کے لیے جعلی این اوسیز بنانے کے الزامات ہیں، ملزم چائنا کٹنگ میں بھی ملوث ہے۔

ایک روز قبل حراست میں لیے گئے جمیل بلوچ نے دورانِ تفتیش اہم انکشافات کیے، نیب ذرائع کے مطابق کے ڈی اے ڈائریکٹر کے تانے بانے بے نامی اکاؤنٹس سے ملنے لگے۔ نیب نے حراست میں لیے جانے والے کے ڈی اے کے ڈائریکٹر کو کراچی کی احتساب عدالت میں پیش کیا جہاں عدالت نے اُن کا چار روزہ راہداری ریمانڈ منظور کیا۔

مزید پڑھیں: کراچی میں 8 ارب سے زائد کی ٹرانزیکشن کے 6 بے نامی اکاؤنٹس کا انکشاف

عدالت سے ریمانڈ ملنے کے بعد نیب نے جمیل بلوچ کو اسلام آباد منتقل کرنے کی تیاریاں شروع کردیں جہاں اُن سے بے نامی اکاؤنٹس سے مزید تفتیش کی جائے گی۔

یاد رہے کہ دو برس قبل جمیل بلوچ پُراسرار طور پر گمشدہ ہوگئے تھے، کئی روز بعد وہ منظر عام پر آئے اور بیان دیا تھا کہ ’’میں نماز کی ادائیگی کے لیے اپنی گاڑی مسجد کے باہر کھڑی کر کے گیا اور واپسی پر گاڑی کے قریب پہنچنے سے قبل ایک نامعلوم شخص سفید گاڑی سے اتر کر میرے پاس آیا اور مجھے مخاطب کر کے اپنے ہمراہ چلنے کا حکم دیا‘‘۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں