The news is by your side.

سعودی ولئ عہد کو امریکا نے خاشقجی قتل کیس میں استثنیٰ دے دیا

لندن: سعودی ولئ عہد محمد بن سلمان کو امریکا نے خاشقجی قتل کیس میں استثنیٰ دے دیا۔

تفصیلات کے مطابق عرب صحافی جمال خاشقجی قتل کیس کے مقدمے سے امریکا نے سعودی ولئ عہد کو مستثنیٰ قرار دے دیا، جس پر انسانی حقوق کی تنظیموں نے شدید برہمی کا اظہار کیا ہے۔

امریکی حکومت کی جانب سے قانونی کارروائی سے استثنیٰ کی تجویز نے صحافی جمال خاشقجی کی بنائی گئی این جی او ڈیموکریسی فار دی عرب ورلڈ ناؤ کے نمائندگان، ان کی منگیتر اور دیگر حامیوں میں شدید غم و غصہ پیدا کر دیا ہے۔

ایمنسٹی انٹرنیشنل کی سیکریٹری جنرل اگنیس کالامرڈ نے استثنیٰ کی سفارش کو بڑا دھوکا قرار دے دیا، جمعہ کے روز اپنے ایک ٹوئٹر پیغام میں انھوں نے لکھا کہ جمال خاشقجی آج ایک بار پھر انتقال کر گئے۔

کیا محمد بن سلمان کو وزیر اعظم بننے کے بعد خاشقجی مقدمے میں استثنیٰ حاصل ہو گیا؟

ادھر امریکی محکمہ انصاف کی جانب سے ڈسٹرکٹ آف کولمبیا کی عدالت میں پیش کی گئی تجویز میں کہا گیا تھا کہ سعودی ولئ عہد محمد بن سلمان اس وقت سعودی حکومت کے وزیر اعظم ہیں، لہٰذا بطور سربراہ سلطنت انھیں اس کیس سے استثنیٰ حاصل ہے۔

امریکی محکمہ انصاف نے جمعرات کی رات دیر گئے اس سفارش کی دستاویز جمع کرائی۔

Comments

یہ بھی پڑھیں