The news is by your side.

Advertisement

تحریک چلانا اپوزیشن کا حق ہے، خواجہ آصف

نواز شریف کو کوئی لالچ نہیں کہ چوتھی دفعہ وزیراعظم بنیں، خواجہ آصف

اسلام آباد : مسلم لیگ ن کے رہنما خواجہ آصف نے کہا تحریک چلانااپوزیشن کاحق ہے، نوازشریف نےایساقدم نہیں اٹھایاجس سےماحول تشدد کا شکار ہو، اور نہ کوئی لالچ ہے کہ چوتھی دفعہ وزیراعظم بنیں۔

تفصیلات کے مطابق مسلم لیگ ن کے رہنما خواجہ آصف نے قومی اسمبلی میں اظہار خیال کرتے ہوئے کہا صلح صفائی اورامن کی بات کریں تومطلب کچھ اورلیاجاتاہے ، سات آٹھ ماہ میں جو ایوان کےحالات رہے وہ قابل رشک نہیں، ہم خلوص سے چاہتے ہیں کہ اسمبلی عزت ووقار چلے، میں سینیٹ دیکھتا ہوں ، رشک آتا ہے وہاں حالات بہتر ہیں۔

خواجہ آصف کا کہنا تھا ہمارے ساتھ ایوان میں محاذ آرائی کا ماحول نہ بنائیں، محاذ آرائی کاماحول بنایاگیا تو ایوان کی کارروائی میں رکاوٹ بنیں گے، ایوان میں تلخی کے اثرات پھر پورے ملک میں پھیلتے ہیں، پاکستان کا آئین وفاق کو جوڑتا ہے، اگر آئین کو پامال کیاجائےگا تو وفاق کو خطرہ ہوگا۔

ماحول کی کشیدگی میں زیادہ ان کا ہاتھ ہے، جو وفاداریاں تبدیل کرتے ہیں

ن لیگی رہنما نے کہا نوازشریف کے بیانیے کی جڑیں مضبوط ہوتی جارہی ہیں، نوازشریف کو کوئی لالچ نہیں کہ چوتھی دفعہ وزیراعظم بنیں، ماحول کی کشیدگی میں زیادہ ان کا ہاتھ ہے، جو وفاداریاں تبدیل کرتے ہیں، فاداریاں تبدیل کرنے والے اپنا وجود کو تسلیم کرانے کیلئے گالم گلوچ کرتے ہیں۔

ان کا کہنا تھا میرے خاندان کی وابستگی جنرل ضیا الحق کے ساتھ رہی ہے ، میں نے معافی بھی مانگی تھی، ہماری سوسائٹی کی روایات نہیں رہی کہ ہم وفادار ہیں، ہمارا ہر آدمی وفادار ہے۔

رہنمامسلم لیگ ن نے کہا بدقسمتی سےدین کوسیاستی مقاصد کیلئے استعمال کیاگیا، دین ایک ضابطہ اخلاق ہے جو قیادت تک مشعل راہ ہے ، دین کو بھی سیاسی دکانداری چمکانے کیلئے استعمال کیاگیا۔

خواجہ آصف نے کہا پارٹی اقتدار میں آتی ہے یا نہیں یہ عوام پر چھوڑ دیا جائے، ہماری جدوجہد میں میثاق جمہوریت کا سنگ میل آیا، نواز شریف نے اس ملک کو اندھیروں سے نکالا، ہم ہر جمعرات کو ملنے جاتے ہیں کل ملنے نہیں دیاگیا، نوازشریف کا عزم جواں ہے۔

نوازشریف کا عزم جواں ہے

ان کا مزید کہنا تھا اقتدار میں آتے ہی پارٹیاں بدلنے والے آگے ہوتے ہیں، کل ہماری حکومت میں ترجمانی میں سب سے آگے تھے، آج اس حکومت میں وہ ترجمانی کرنے والے آگے ہیں، سیاست کا احترام بحال کرنا ہے تو ایسے لوگوں کو مقام نہ دیں۔

ن لیگی رہنما نے کہا ذاتی مفاد کے لیے وفاداریاں تبدیل نہیں ہونی چاہئیں، وفاداریاں تبدیل کرتے بھی ہیں تو یہ زبان، رویہ درست رکھیں، کل ایک صاحب ایسے بات کر رہے تھے انہیں1964 سے جانتاہوں، وہ صاحب مشرف کے بھی وزیر تھے۔

خواجہ آصف کا کہنا تھا 200 ارب روپے ریفنڈ، ایف بی آر کی طرف وصول ہونا ہے ، ہماری برآمدات گررہی ہیں،نئی پالیسی مزید نقصان پہنچائےگی ، تحریک چلانا اپوزیشن کاحق ہے، نوازشریف نے ایسا قدم نہیں اٹھایا، جس سے ماحول تشدد کا شکار ہو۔

تاریخ میں کوئی حکومت اتنی جلدی ڈس کریڈٹ نہیں ہوئی

انھوں نے کہا آج بھی تحریک اورحکومت کےخاتمےکی بات ہورہی ہے ، تاریخ میں کوئی حکومت اتنی جلدی ڈس کریڈٹ نہیں ہوئی ، ایک سال ہونےکومعیشت کی سلائیڈرک نہیں رہی، معیشت جب بگڑتی ہے تو سیکیورٹی کوخطرےمیں ڈالتی ہے ، ہمارامعاشی طورپرمضبوط ہونادفاع کومضبوط کرتاہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں