The news is by your side.

Advertisement

خواجہ اظہار پر حملہ آور ملزم کے گھر پر چھاپہ‘ والد گرفتار

کراچی: متحدہ قومی موومنٹ پاکستان کے رہنما خواجہ اظہار الحسن پر ہونے والے قاتلانہ حملے میں ملوث ملزم کی شناخت ہوگئی ہے‘ خواجہ اظہار گزشتہ روز ہونے والے حملے میں محفوظ رہے تھے‘ تاہم دو افراد جاں بحق اور پانچ زخمی ہوئے تھے۔

تفصیلات کے مطابق گزشتہ روزنمازِ عید کی ادائیگی کے بعد خواجہ اظہار الحسن پر قاتلانہ حملے میں ملوث ملزم کی شناخت حسان کے نام سے ہوئی ہے‘ مذکورہ ملزم پولیس کی مبینہ جوابی فائرنگ سے جاں بحق ہوگیا تھا۔

حسان نامی اس ملزم کے سہراب گوٹھ میں واقع گھر پرچھاپہ مار کرقانون نافذ کرنےوالےاداروں نےملزم کےوالد اوردیگرافرادکوحراست میں لےلیا ہے۔

خواجہ اظہار الحسن قاتلانہ حملے میں بچ گئے، گارڈ جاں بحق*

سندھ اسمبلی کے اپوزیشن لیڈر خواجہ اظہار گزشتہ روز ہونےوالے اس حملے میں محفوظ رہے تھے تاہم ایک بچہ اور ایک پولیس اہلکار جاں بحق جبکہ پانچ افراد اس واقعے میں زخمی بھی ہوئے تھے۔

خواجہ اظہار الحسن کا ا س واقعے کے بعد برطانوی نشریاتی ادارے کو دیے انٹرویو میں ان کا کہنا تھاکہ ممکن ہے ان پر حملے کی منصوبہ بندی میں ایسے لوگ شامل ہوں جو ان کے قریب ہیں کیونکہ انھوں نے اپنے نماز کے شیڈول اور جگہ کو خفیہ رکھا تھا۔

دوسری جانب انہوں نے خود پر ہونے والے ناکام قاتلانہ حملے میں ایم کیو ایم لندن کے ملوث ہونے کے امکان کو بھی مسترد نہیں کیا۔

آئی جی سندھ اے ڈی خواجہ کا کہنا ہے کہ حملےمیں کون ساگروپ ملوث ہے،ابھی نہیں کہاجاسکتاہے‘ قیاس آرائیوں سےتفتیش متاثرہوگی۔ انہوں نے یہ بھی کہا کہ سیاسی دھڑےبندی کےبعدایم کیوایم پاکستان کوخطرات سےآگاہ کیاتھا۔


اگر آپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اور اگر آپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی وال پر شیئر کریں۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں