The news is by your side.

Advertisement

کورونا سے متاثر ہونے والے بچوں کے حوالے سے اہم انکشاف

ایک تحقیق میں کورونا وائرس سے متاثرہ بچوں میں کووڈ اینٹی باڈیز کی سطح بالغ افراد کے مقابلے میں بہت کم ہونے کا انکشاف سامنے آیا۔

عالمی وبا کورونا وائرس سے دنیا بھر میں بڑوں کے ساتھ بچوں کی بھی ایک بہت بڑی تعداد متاثر ہوئی ہے اور ان میں سے کچھ کو پیچیدگیوں کی وجہ سے اسپتال میں داخل بھی ہونا پڑا ہے۔

آسٹریلیا میں ہونے والی ایک طبی تحقیق میں یہ بات سامنے آئی ہے کہ کورونا سے متاثر بچوں کے اندر وائرس ناکارہ بنانے والی اینٹی باڈیز بننے کی سطح بالغ افراد کے مقابلے میں بہت کم ہوتی ہے۔

اس تحقیق میں 57 بچوں (اوسط عمر 4 سال) اور 51 بالغ افراد (اوسط عمر 37 سال) کو شامل کیا گیا، جو 10 مئی سے 28 اکتوبر 2020 کے درمیان کووڈ کا شکار ہوئے تھے۔

ان افراد میں بیماری کی علامات کی معمولی شدت کی تھی اور انھیں سردرد اور بخار جیسی علامات ظاہر نہیں ہوئیں۔

محققین نے وائرل آر این اے کی سطح کی جانچ پڑتال کے لیے ان افراد کے ناک اور حلق سے نمونے اور امیونوگلوبلن جی اینٹی باڈیز کا جائزہ لینے کے لیے خون کے نمونے حاصل کیے۔

جس سے یہ بات سامنے آئی کہ صرف 37 فیصد بچوں میں اینٹی باڈیز بنیں ، جو دوبارہ بیمار ہونے سے بچانے میں مدد دیتی ہے جبکہ بالغ افراد میں یہ تعداد 76 فیصد تھی۔

نتائج سے یہ سوال سامنے آیا کہ بچوں کو مستقبل میں بیماری سے کس حد تک تحفظ حاصل ہوتا ہے۔

محققین نے خدشہ ظاہر کیا کہ بچوں میں کورونا سے دوبارہ بیمار ہونے کا خطرہ زیادہ ہوسکتا ہے مگر ابھی اس حوالے سے مزید معلومات کی ضرورت ہے۔

یاد رہے اس سے قبل امریکا کی کولمبیا یونیورسٹی کی ایک تحقیق میں بھی یہ بات ثابت ہوئی تھی کہ کووڈ کے خلاف بچوں میں اینٹی باڈی ردعمل بالغ افراد کے مقابلے میں مختلف ہوتا ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں