The news is by your side.

Advertisement

کورنگی کاز وے : لوگوں کو ڈوبنے سے بچانے والے نوجوان خود پانی میں بہہ گئے

کراچی : کورنگی کاز وے پر لوگوں کی مدد کرتے ہوئے ڈوبنے والے دو نوجوان تاحال لاپتہ ہیں، ریسکیو ٹیمیں ان کی تلاش میں ہیں لیکن اب تک کوئی سراغ نہیں مل سکا۔

تفصیلات کے مطابق اندرون سندھ اور کراچی میں ہونے والی موسلا دھار بارشوں کے بعد ندی نالوں میں بھی شدید طغیانی آگئی ہے، جس کے باعث ندی سے گزرنے والی سڑکوں کو بند کردیا گیا ہے۔

اس حوالے سے کراچی کی ملیر ندی میں کورنگی کے مقام پر کاز وے بھی ٹریفک کیلئے بند کردی گئی جس کے سبب وہاں سے گزرنے والے شہریوں کو شدید مشکلات کا سامنا کرنا پڑا۔

گزشتہ روز کورنگی کاز وے پر لوگ اپنی مدد آپ کے تحت وہاں گزر رہے تھے کہ اس دوران پانی کے تیز بہاؤ کی وجہ سے وہ اپنا توازن برقرار نہ رکھ سکے اور ندی میں بہہ گئے۔

اس دوران وہاں موجود کچھ نوجوانوں نے ان کی مدد کرنے کی کوشش کی اور لوگوں کی مدد کرتے ہوئے یہ نوجوان خود بھی تیز بہاؤ کا شکار ہوگئے۔

اے آر وائی نیوز کے نمائندے علی حسن کے مطابق ڈوبنے والے دونوں نوجوان اب تک لاپتہ ہیں، کورنگی کاز وے میں لاپتہ افراد ہونے والے افراد کی تلاش جاری ہے، اور ان کے اہل خانہ شدید ذہنی اذیت سے دو چار ہیں۔

خیال رہے کہ کراچی میں اگست کے مہینے میں مون سون بارشوں کا 36 سالہ ریکارڈ ٹوٹ گیا، اس سے قبل فیصل بیس میں سب سے زیادہ بارش 1984 میں 298.4 ملی میٹر ریکارڈ کی گئی تھی۔

محکمہ موسمیات کے مطابق رواں ماہ اگست میں اب تک فیصل بیس میں 345 ملی میٹر بارش ریکارڈ کی گئی۔ جاری کردہ اعدادو شمار کے مطابق مسرور بیس میں سب سے زیادہ بارش 2007 میں 272 ملی میٹر ریکارڈ ہوئی تھی جبکہ رواں ماہ اب تک مسرور بیس میں 228.5 ملی میٹر ریکارڈ ریکارڈ ہوئی۔

Comments

یہ بھی پڑھیں