The news is by your side.

Advertisement

کورنگی فیکٹری سانحہ: مختلف محکمے ریسکیو آپریشن میں تاخیر کے ذمے دار قرار

کراچی : کورنگی فیکٹری سانحے سے متعلق تفتیش میں کہا گیا ہے کہ مختلف محکموں کی غفلت سے ریسکیو آپریشن تاخیر سے شروع ہوا، فیکٹری سے چند قدم دور تھانے کی نفری بھی تاخیر سے پہنچی۔

تفصیلات کے مطابق کراچی کے ضلع کورنگی کے علاقے مہران ٹاؤن میں واقع چمڑا رنگنے کی فیکٹری میں ہونے والی آتشزدگی سے متعلق تفتیش میں چونکا دینے والے انکشافات کیے گئے ہیں۔

تفتیشی ذرائع کا کہنا ہے کہ مختلف محکموں کی غفلت سے ریسکیو آپریشن میں تاخیر ہوئی، فیکٹری سے چند قدم دور تھانے کی نفری بھی تاخیر سے پہنچی۔

تفتیشی ذرائع کا کہنا ہے کہ فائربریگیڈ کو 10بجکر 8 منٹ پر آگ لگنےکی اطلاع ملی لیکن ڈرائیور نہ ہونے کی وجہ سے کورنگی فائر اسٹیشن سے 2 میں سے ایک گاڑی ہی روانہ کی جاسکی، 10 بجکر 24 منٹ پر مزید گاڑیاں لانڈھی اور سٹی فائر اسٹیشن سے بھیجی گئیں۔

تفتیشی ذرائع نے کہا کہ یکٹری میں چمڑے کی اشیا تیار کی جاتی تھیں جہاں کیمکلز کا استعمال زیادہ تھا اسی لیے آگ زیادہ پھیلی جب کہ مختلف کیمیکل ملنے سے گیس بنی جس سے اموات زیادہ ہوئیں۔

تفتیشی ذرائع کے مطابق تمام افراد کی اموات دھواں بھرجانے سے ہوئی، فائر بریگیڈ کی ابتدائی رپورٹ تاحال تیار نہیں کی جاسکی۔

پولیس کا کہنا ہے کہ سیکیورٹی گارڈ کا بیان لے لیا گیا ہے، فیکٹری مالک کو جلد گرفتار کرلیا جائے گا۔

واضح رہے کہ گزشتہ روز فیکٹری میں آگ لگنے سے 16 افراد جاں بحق ہوئے جب کہ ایک شخص حادثے میں اپنے بیٹے کی موت پر صدمے سے چل بسا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں