The news is by your side.

پانچ سال بعد پہلی مرتبہ سات افراد کو سزائے موت کیوں دی گئی؟

کویت سٹی : قتل اقدام قتل اور دیگر سنگین جرائم میں ملوث 7 مجرمان کو کویتی عدالت نے پھانسی کی سزا دے دی، اس نوعیت کا فیصلہ 5 سال بعد سامنے آیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق کویت کی عدالت نے قتل اور دیگر مقدمات کی مکمل سماعت کے دوران حاصل ہونے والے ثبوتوں اور گواہان کی رشنی میں سات افراد کو پھانسی کی سزا سنائی ہے۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کی رپورٹ کے مطابق ایمنسٹی انٹرنیشنل کی جانب سے مذمت کے باوجود کویت میں چار کویتی، ایک پاکستانی، ایک شامی اور ایک ایتھوپیا کی شہری کو پھانسی دے دی گئی۔

کویت کی سرکاری خبر رساں ایجنسی نے بھی تصدیق کرتے ہوئے کہا کہ ملک میں سات افراد کو اجتماعی پھانسی دی گئی ہے، کویت نے انسانی حقوق کی جانب سے ان افراد کی معافی کی اپیلیں بھی مسترد کردی تھیں۔

واضح رہے کہ 2017 کے بعد یہ پہلا موقع ہے کہ کویت نے اجتماعی پھانسی کی سزا پر عمل درآمد کیا ہے۔ آج جن قیدیوں کو پھانسی دی گئی ان سات افراد میں سے دو خواتین بھی شامل تھیں۔

واضح رہے کہ 25 جنوری 2017 کے بعد یہ پہلی پھانسی تھی، جب ڈھائی صدیوں سے ملک پر حکمرانی کرنے والے شاہی علی الصباح خاندان کے ایک فرد سمیت سات افراد کو بھی پھانسی دی گئی۔

ممتاز حقوق کی تنظیم ایمنسٹی انٹرنیشنل نے منگل کو پھانسیوں کو روکنے کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا تھا کہ یہ زندگی کے حق اور حتمی ظالمانہ، غیر انسانی اور ذلت آمیز سزا کی خلاف ورزی ہیں اور کویت کو سزائے موت کو مکمل طور پر ختم کر دینا چاہیے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں