The news is by your side.

Advertisement

کویت آنے کے لیے غیرملکی مسافروں کو کیا کرنا ہوگا؟

کویت سٹی : کورونا وائرس کی موجودہ صورتحال کے بعد فضائی آپریشن کی معطلی سے پیدا ہونے والے مسائل سے کویت آنے والے غیر ملکیوں کو شدید مشکلات درپیش ہیں۔

اس حوالے سے کویتی ذرائع ابلاغ کا کہنا ہے کہ حالیہ دنوں میں غیر ممنوعہ ممالک میں 14دن گزارنے والے تارکین وطن کے پاس کویت آنے کیلئے صرف دو راستے ہیں۔

ایئر پورٹس کو 10روز کیلئے بند رکھنے کے فیصلے کے بعد وہ مسافر جو کویت میں داخلے کی تیاری میں کسی دوسرے ملک میں 14دن گزار رہے ہیں ان کو یا تو آئندہ سال جنوری کے پہلے ہفتے میں ایئر پورٹ کھلنے تک اسی ملک میں قیام کرنا پڑے گا یا واپس اپنے ملک جانا ہوگا۔

کویتی اخبار کے مطابق مننوعہ ممالک کی فہرست میں آنے والے تارکین وطن جو غیر ممنوعہ تیسرے ملک سے واپس لوٹنا چاہتے ہیں ان کو یہ فیصلہ کرنا ہوگا کہ انہیں وہیں رکنا ہے یا کویتی حکومت کے اگلے فیصلے کا انتظار کرنا ہے۔

اس حوالے سے سیاحت اور ٹریول مارکیٹ کے ذرائع کا کہنا ہے کہ کالعدم ممالک میں رہائش پذیر تارکین وطن فلائٹ کی بکنگ اور سفر کی سہولیات سے متعلق معلومات مسلسل حاصل کررہے ہیں۔ یہ تارکین وطن پریشانی کا شکار ہیں کیونکہ ان کے پاس کویت جانے کیلئے کچھ ہی دن باقی ہیں۔

ذرائع کا مزید کہنا ہے کہ زیادہ تر ٹریول کمپنیاں اپنے صارفین کیلئے کوئی فیصلہ کرنے سے قاصر ہیں لیکن عام تاثر یہ ہے کہ شاید ٹرانزٹ ملک کیلئے سفر کرنا میسر ہوگا جس کیلئے خاص طریقہ کار ہوگا۔ یہ کویتی حکومت پر منحصر ہے کہ وہ کب نیا فیصلہ جاری کرتی ہے جس سے ان کی واپسی آسان ہوگی۔

اس کے علاوہ وہ لوگ جو پہلے ہی سفر کرچکے ہیں اور قرنطین کے سبب ٹرانزٹ ملک میں قیام پذیر ہیں ان کیلئے دو مختلف حالات ہیں، پہلا یہ کہ جن پاس کافی وقت ہے اور یہ ایام گزارنے کیلئے وہ اپنی خوراک اور رہائش کا انتظام باآسانی کرسکتے ہیں، اگر مدت میں مزید توسیع کردی جاتی ہے تو وہ ان کیلئے پریشانی کا باعث بن سکتی ہے۔

دوسری صورتحال ان لوگوں کیلئے پریشانی کا باعث ہے جن کے معطلی کی مدت کے دوران ٹرانزٹ ملک میں قیام کی مدت ختم ہوجائے گی جس کے باعث وہ اس ملک میں اپنا قیام بڑھانے یا اپنے آبائی ملک واپس جانے کا فیصلہ کرنے پر مجبور ہوں گے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں