site
stats
پاکستان

لاہور دھماکا: خودکش بمبار کو افغان بارڈر سے لایا، ملزم کا ویڈیو بیان

لاہور: سانحہ لاہور چیئرنگ کراس میں گرفتار سہولت کار نے اعتراف کیا ہے کہ وہ خودکش حملہ آور کو طور خم بارڈر سے لاہور لایا، حملہ آور کا تعلق افغانستان سے ہے۔

وزیراعلیٰ پنجاب شہباز شریف نے پریس کانفرنس میں ملزم کے اعترافی بیان کی ویڈیو دکھائی جس میں ایک ملزم انوار الحق کو دکھایا گیا ہے جس کا تعلق باجوڑ سے ہے۔

ویڈیو میں دیکھا جاسکتا ہے کہ ملزم انوار الحق اعتراف کررہا ہے اس کا تعلق جماعت الاحرار سے ہے اور وہ باجوڑ کا رہائشی ہے، ان کا ہدف پولیس اہلکار تھے۔

ملزم نے بتایا کہ اس نے ان کاموں کی تربیت جماعت الاحرار سے یہیں پاکستان میں حاصل کی،15 سے 20 بار افغانستان گیا، تنظیمی نام عبدالحیان تھا،اس حملے کا حکم عمر خالد خراسانی اور جماعت الاحرار نے دیا۔

دھماکے کے سوال پر اس نے بتایا کہ اسے کہا  گیا کہ لاہور جاؤ اور وہاں موجود پولیس اہلکاروں کو نشانہ بناؤ وہ جہاں بھی نظر آئیں، میں نے چکر لگایا مال روڈ پر پولیس نظر آئی جلدی سے واپس گیا اور بمبار کو وہاں لے آیا اور اس نے خود کو اڑالیا۔

ملزم نے بتایا کہ خودکش بمبار کا نام نصراللہ تھا اور وہ عمر خالد خراسانی گروپ سے تعلق رکھتا تھا اور افغانستان میں کنڑ کے مقام پر رہائش پذیر تھا۔

بیان کی مکمل ویڈیو:

مختصر ویڈیو: 

اس کا کہنا تھا کہ اسے خودکش جیکٹ 20 سے 25 دن پہلے ملی تھی جو کہ تنظیم کی طرف سے عارف نامی شخص نے پہنچائی، خودکش جیکٹ کو پشاور سے لاہور ٹرک میں لایا گیا تھا،خودکش جیکٹ کو ٹرک سے لانے کے لیے دو لاکھ روپے میں بات ہوئی تھی۔


یہ بھی پڑھیں: خود کش بمبار کو لانے والا ملزم گرفتار


 واضح رہے کہ ملزم کو سی سی ٹی وی فوٹیج کی مدد سے گرفتار کیا گیا جس میں وہ ملزم کو بائیک پر بٹھا کر لے جارہا ہے۔
Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top