تھائی لینڈ کے بادشاہ کی ایک سال بعد شاہانہ انداز میں آخری رسومات ادا -
The news is by your side.

Advertisement

تھائی لینڈ کے بادشاہ کی ایک سال بعد شاہانہ انداز میں آخری رسومات ادا

بنکاک : تھائی لینڈ کے بادشاہ کی آخری رسومات ایک سال بعد ادا کر دی گئیں، بادشاہ کی آخری رسومات پرنوے ملین ڈالرز خرچ کئے گئے ہیں۔

تھائی لینڈ کے بادشاہ کی آخری رسومات کی ادائیگی کے موقع پر سنہری روایتی لباس، فوجی بینڈز کی آوازیں مگر سب بہت اداس تھے، بادشاہ کے آخری دیدارکرنے کے لیےبنکاک میں ہزاروں افراد سیاہ لباس میں ملبوس گرینیڈ پیلس پہنچے۔

ستر سال تک اقتدار کی کرسی سنبھالنے والے تھائی لینڈ کے بادشاہ اٹھاسی برس کی عمر میں گزشتہ سال انتقال کر گئے تھے، جس کے بعد بادشاہ کی لاش کو سرکاری محل میں حنوط کر کے محفوظ کر دیا گیا تھا اور بادشاہ کی موت کا غم ایک سال تک منائے جانے کا اعلان کیا گیا تھا۔

 

دنیا کی تاریخ میں تھائی بادشاہ کا سفرِ آخرت مہنگا ترین شمار کیا جارہا ہے، تھائی لینڈ کے بادشاہ کی آخری رسومات کی ادائیگی پر نوے ملین ڈالر خرچ ہوئے۔


مزید پڑھیں :  تھائی لینڈ کے بادشاہ کی آخری رسومات پر90 ملین ڈالرز خرچ


وضح رہے کہ تھائی بادشاہ کو 1964ء میں ان کے بھائی کے انتقال پر بادشاہ بنایا گیا، وہ امریکی ریاست میسا چوسٹ میں پیدا ہوئے تھے اورتھائی لینڈ میں 70 سال تک برسر اقتدار رہے۔

بادشاہ بھومی بول کے جانشین 63 سالہ ولی عہد شہزادہ وجیرالونگ کورن کو عوام میں وہ پذیرائی حاصل نہیں ہے جو ان کے والد کو تھی،تھائی لینڈ کے قوانین کے مطابق عوامی سطح پر جانشینی کے معاملات پر بات کرنا قابل تعزیر جرم ہے۔


اگر آپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اور اگر آپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی وال پر شیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں