site
stats
پاکستان

اسلام آباد بلدیاتی الیکشن: غیرحتمی نتائج، تحریک انصاف کو برتری حاصل

اسلام آباد: وفاقی دارالحکومت میں تاریخ کے پہلے بلدیاتی انتخابات کے نتائج کا سلسلہ جاری ہے اور اب تک موصول ہونے والے نتائج کے مطابق تحریک انصاف کو برتری حاصل ہے۔

اسلام آبادکے پہلے بلدیاتی الیکشن کے غیرحتمی نتائج کاسلسلہ جاری ہے چیئرمین کی نشست پرتحریک انصاف کےنو اورن لیگ کے چھ جب کہ تین آزاد امیدوار چییرمین منتخب ہوچکے ہیں۔

وفاقی دارالحکومت میں اس وقت جیتنے والے امیدواروں کے حامیوں کی جانب سے جشن کا سلسلہ جاری ہے کہیں مسلم لیگ ن تو کہیں تحریک انصاف کے حامی جشن منارہے ہیں۔ آزاد امید واروں کی جانب سے بھی مٹھائیوں کی تقسیم کا سلسلہ جاری ہے۔

پریذائڈنگ افسران کو بروقت اور فوری نتائج کی ترسیل کے لئے 200 اسمارٹ فونز فراہم کئے گئے تھے اور انہیں ان کی ٹریننگ بھی دی گئی تھی اس کے باوجود نتائج کی ترسیل کا سلسلہ انتہائی سست روی کا شکار ہے.

الیکشن کمیشن نے اسلام آباد کے 200پولنگ اسٹیشنز کے نتائج فوری حاصل کرنے کے لیے جدید ٹیکنالوجی متعارف کرادی ۔

الیکشن کمیشن کے ایڈیشنل سیکرٹری فدا محمد خان نے نیوز بریفنگ میں بتایا کہ اینڈرائیڈ ٹیکنالوجی کے ذریعے افسران نتائج کی کاپی فوری الیکشن کمیشن نے سسٹم میں بھجوائیں گے جس سے نتائج شفاف بنانے میں مدد ملے گی۔

انہوں نے کہا کہ یہ تجربہ کامیاب رہا تو 2018کے عام انتخابات میں یہ ٹیکنالوجی استعمال کی جائے گی۔فدا محمد خان کا کہنا تھا کہ اسلام آباد میں بہتر انداز میں انتخابی عمل جاری رہا اور پولنگ کا وقت نہ بڑھانے کا مطالبہ کیا گیا ،ان کا کہنا تھا کہ انتخابات کے دوران 31سے زائد شکایات ہوئی جن میں بعض سٹیمپ پیڈ کے بارے میں تھیں۔

ان شکایاt کا ازالہ کر اگیا تاہم انکوائری بھی کرائی جائے گی، عمران خان کے جلسے کے سوال پر انہوں نے کہا کہ ضابطہ اخلاق کی پاسداری سب کی ذمہ داری ہے۔

واضح رہے کہ اسلام آباد میں112 انتہائی حساس پولنگ سٹیشنز پر پاک فوج اور پولیس کو تعینات کیا گیا، خواتین کے پولنگ سٹیشنز پر ایک ہزار خواتین سیکیورٹی اہلکار بھی تعینات کی گئیں۔ سیکیورٹی کے سخت انتظامات کی وجہ سے پولنگ کا انعقاد انتہائی پر سکون ماحول میں ہوا تاہم ٹرن آوٹ صر ف30فیصد رہا ۔ سیکریٹری الیکشن کمیشن بابر یعقوب نے مختلف پولنگ سٹیشن کا دورہ کرتے ہوئے انتظامات کا جائزہ لیا ۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top