site
stats
پاکستان

لاہور: کالے ہرن کا تحفظ، عدالت نے وائلڈ لائف سے تفصیل مانگ لی

لاہور: ہائی کورٹ نے محکمہ وائلڈ لائف سے کالے ہرن کی نسل کے تحفظ کے لیے کیے جانے والے اقدامات کی تفصیلات طلب کرلیں۔

تفصیلات کے مطابق لاہور ہائی کورٹ میں کالے ہرن کی معدوم ہوتی نسل اور اس کے تحفظ کے لیے دائر درخواست کی سماعت چیف جسٹس لاہور ہائی کورٹ منصور علی شاہ نے کی۔

درخواست میں مؤقف اختیار کیا گیا ہے کہ کالے ہرن کی نسل بہت تیزی سے ختم ہورہی ہے اور خطرناک حد تک اس کی نسل میں کمی ہوئی رہے، اس تمام تر صورتحال کے باوجود حکومت ہرن کو تحفظ دینے کے لیے کوئی اقدامات نہیں کررہی۔

درخواست گزار نے مؤقف اختیار کیا کہ بہاولپور میں کالے ہرن چوری ہوئے مگر حکومت اور شعبہ وائلڈ لائف نے اُن کی برآمدگی کے حوالے سے کوئی اقدامات نہیں کیے جبکہ جانوروں کے تحفظ کے لیے 2015 میں پالیسی مرتب کی گئی تاہم شعبہ وائلڈ لائف اس پر کوئی عمل درآمد نہیں کررہا۔

درخواست گزار نے لاہور ہائی کورٹ کو بتایا کہ بھارت میں کالے ہرن کے شکار پر مکمل پابندی عائد ہے اور اس ضمن میں معروف بالی ووڈ اداکار سلمان خان کو مقدمے کا سامنا کرنا پڑا تھا۔

چیف جسٹس لاہور ہائی کورٹ نے محکمہ وائلڈ لائف سے کالے ہرن کے تحفظ سے متعلق تمام تر تفصیلات طلب کرلیں اور ہدایت کی کہ محکمے کی جانب سے جو بھی اقدامات کیے گئے اُن کی تصاویر بھی پیش کی جائیں، درخواست پر مزید کارروائی 20 ستمبر کو ہوگی۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top