The news is by your side.

Advertisement

مسلم لیگ ن کے ایم این اے رانا زاہد کی جعلی ڈگری، الیکشن کمیشن کو ایک ماہ میں فیصلہ کرنے کا حکم

لاہور : لاہور ہائیکورٹ نے حکمران جماعت مسلم لیگ نون کے رکن قومی اسمبلی رانا زاہد کی جعلی ڈگری کی بنیاد پر نااہلی کیلئے درخواست نمٹا دی اور الیکشن کمیشن کو ایک ماہ میں فیصلہ کرنے کا حکم دے دیا۔

تفصیلات کے مطابق لاہور ہائیکورٹ کی جسٹس عائشہ اے ملک نے کیس کی سماعت کی، درخواست گزار رانا آفتاب نے مؤقف اختیار کیا کہ رانا زاہد جعلی ڈگری کے حامل ہیں اور وہ آئین کے آرٹیکل باسٹھ تریسٹھ پر پورا نہیں اترتے۔

رکن قومی اسمبلی رانا زاہد حسین نے حلقہ 166 سے قومی اسمبلی کا الیکشن لڑا اور جعلی ڈگری کی بنیاد پر انتخابات میں حصہ لیا۔

درخواست میں کہا گیا کہ رکن قومی اسمبلی رانا زاہد حسین نے حلقہ 166 سے قومی اسمبلی کا الیکشن لڑا اور جعلی ڈگری کی بنیاد پر انتخابات میں حصہ لیا۔ مسلم لیگ نون کے رکن قومی اسمبلی نے بیک وقت بلوچستان یونیورسٹی اور پنجاب یونیورسٹی سے ڈگریاں حاصل کیں۔

درخواست گزار نے مزید کہا کہ دونوں یونیورسٹیوں کی ڈگریوں کو جعلی قرار دیا جا چکا ہے، الیکشن کمیشن کو تمام ثبوت فراہم کیے لیکن کوئی کارروائی نہیں کی گئی۔

وکیل نے استدعا کی کہ رانا زاہد کو جعلی ڈگری پر الیکشن لڑنے پر نا اہل قرار دیا جائے، جس کے بعد عدالت نے درخواست نمٹاتے ہوئے الیکشن کمیشن کو ایک ماہ میں فیصلہ کرنے کا حکم دے دیا۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں‘ مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہچانے کے لیے سوشل میڈیا پر شیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں