The news is by your side.

Advertisement

نیند کو بہتر بنانے کا مؤثر طریقہ

نیند کو بہتر کرنے کے لیے ویسے تو کئی طریقے ہیں لیکن حال ہی میں ماہرین نے ایک اور مؤثر طریقے کی طرف اشارہ کیا ہے۔

امریکا میں ہونے والی ایک تحقیق کے مطابق ویٹ ٹریننگ کو جسمانی سرگرمیوں کا حصہ بنانا بے خوابی کے مسئلے پر قابو پانے میں مدد فراہم کرتا ہے۔

آئیووا اسٹیٹ یونیورسٹی کی تحقیق میں بتایا گیا کہ ویٹ ٹریننگ اچھی نیند کے حصول میں ایروبک ورزشوں سے مؤثر ثابت ہوسکتی ہے۔

ماہرین کا کہنا ہے کہ یہ بات سائنس اور شواہد سے معلوم ہوچکی ہے کہ ایروبک ورزشیں نیند کے لیے اچھی ہیں مگر ہماری تحقیق میں دریافت ہوا کہ ویٹ ٹریننگ اس حوالے سے زیادہ بہترین ہے۔

تحقیق میں مختلف گروپس کو شامل کیا گیا تھا جن میں سے ایک گروپ وہ تھا جس نے ایک سال تک صرف ویٹ ٹریننگ کی اور رات کو ان کی نیند میں اوسطاً 40 منٹ کا اضافہ ہوگیا۔

اس کے مقابلے میں 12 ماہ تک صرف ایروبک ورزشیں کرنے والے افراد کی نیند میں اوسطاً 23 منٹ اضافہ ہوا، اسی طرح جن افراد نے دونوں طرح کی ورزشیں کیں ان کی نیند میں اوسطاً 17 منٹ اضافہ ہوا۔

ویسے تو ورزش دل، دماغ اور مجموعی صحت بہتر بنانے کے لیے اہم ترین ذرائع میں سے ایک ہے جبکہ اس سے رات کی نیند بھی بہتر ہوتی ہے، مگر اب تک زیادہ تر توجہ ایروبک ورزشوں پر مرکوز کی گئی تھی جس میں دوڑنا، سوئمنگ، سائیکل چلانا، رسی پھلانگنا اور تیز رفتاری سے چہل قدمی قابل ذکر ہیں۔

ریزیزٹنس ورزشوں میں وزن اٹھانا، مشین ویٹ استعمال کرنا، الاسٹک ریزیزٹنس بینڈ اور پش اپ وغیرہ قابل ذکر ہیں۔

ماہرین نے بتایا کہ ہماری تحقیق بالغ افراد میں ورزشوں کے ٹرائل پر مبنی تھی اور یہ پہلی تحقیق جس میں 2 اقسام کی ورزشوں کا موازنہ کیا گیا۔

تحقیق کے مطابق ویٹ ٹریننگ سے اضافی 40 منٹ کی نیند کے ساتھ ساتھ رات کو اٹھنے کی شرح میں بھی کمی آتی ہے جبکہ نیند کا معیار بھی بہتر ہوتا ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں