The news is by your side.

Advertisement

گلوکارہ میڈونا کی کرونا وائرس کے علاج کی پوسٹ انسٹاگرام نے سنسر کر دی

واشنگٹن: عالمی شہرت یافتہ سپر اسٹار سنگر میڈونا کی کرونا وائرس کے علاج سے متعلق ایک پوسٹ انسٹاگرام نے سنسر کر دی۔

تفصیلات کے مطابق گلوکارہ میڈونا کو کو وِڈ 19 کے علاج سے متعلق غلط معلومات پھیلانے پر انسٹاگرام پر سنسر کیا گیا ہے، میڈونا نے انسٹاگرام پر اس سلسلے میں ایک ویڈیو شیئر کی تھی جسے امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے بھی ری ٹویٹ کر دیا۔

انسٹاگرام پر میڈونا کے فالوورز کی تعداد ڈیڑھ کروڑ سے بھی زائد ہے، اپنے مداحوں کے لیے انھوں نے ایک ویڈیو شیئر کی جس میں دعویٰ کیا گیا تھا کہ کرونا وائرس کے لیے کئی مہینوں سے ایک تصدیق شدہ ویکسین موجود ہے، لیکن اسے خفیہ رکھا جا رہا ہے تاکہ دولت مند مزید امیر ہو جائیں اور غریب اور بیمار افراد مزید بیمار ہوں۔

انھوں نے اپنی پوسٹ میں امریکی معالج اسٹیلا امانوئل کی ایک ویڈیو لگائی تھی جنھوں نے ملیریا کی دوا ہائیڈروکسی کلوروکوئن کو کرونا وائرس کی معجزانہ دوا قرار دیا تھا، اس سلسلے میں ان کی کئی ویڈیوز انٹرنیٹ پر تیزی سے پھیلی تھیں لیکن ملیریا کی یہ دوا کرونا وائرس کے خلاف مؤثر نہیں پائی گئی۔

کرونا ویکسین کی تیاری: میڈونا کا اہم اعلان

بدھ کو غیر ملکی میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے فیس بک کی کمپنی (انسٹاگرام کی بھی مالک) کے نمائندے نے کہا کہ ہم نے ایک ایسی ویڈیو ہٹا دی ہے کہ جس میں کرونا وائرس کے لیے علاج اور بچاؤ کے سلسلے میں جھوٹا دعویٰ کیا گیا تھا۔

انھوں نے کہا کہ جن لوگوں نے اس ویڈیو پر رد عمل ظاہر کیا، اس پر تبصرہ کیا، یا اسے شیئر کیا، انھیں اب ایسے پیغامات دکھائی دیں گے جن میں وائرس سے متعلق مستند معلومات فراہم کی گئی ہوں گی۔

میڈونا کی پوسٹ ڈیلیٹ کر دی گئی تھی تاہم اس کے اسکرین شارٹ سے پتا چلتا ہے کہ انسٹاگرام نے اسے پہلے دھندلا کیا ہوا تھا، اور اس پر لکھا تھا کہ یہ جھوٹی معلومات ہیں اور آزاد فیکٹ چیکرز اس کا تجزیہ کر چکے ہیں۔

مذکورہ ویڈیو کلپس ڈیلیٹ ہونے سے قبل امریکی صدر ٹرمپ نے بھی رواں ہفتے متعدد بار اپنے 84 ملین فالوورز کے لیے ٹویٹ کی تھیں، ان کے صاحب زادے ڈونلڈ ٹرمپ جونیئر کو منگل کے دن مذکورہ ویڈیو کو ٹویٹ کرنے پر ٹویٹر پر عارضی طور پر روک دیا گیا تھا۔

ویڈیو میں اسٹیلا امانوئل واشنگٹن میں سپریم کورٹ کی سیڑھیوں پر دعویٰ کرتی نظر آتی ہیں کہ کوئی بیمار نہیں پڑے گا، اس وائرس کا علاج موجود ہے جسے ہائیڈروکسی کلوروکوئن کہتے ہیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں