تازہ ترین

پاکستان کو آئی ایم ایف سے 6 ارب ڈالر قرض پروگرام کی توقع

وفاقی وزیر خزانہ محمد اورنگزیب نے کہا ہے کہ...

اسرائیل کا ایران پر فضائی حملہ

امریکی میڈیا کی جانب سے یہ دعویٰ سامنے آرہا...

روس نے فلسطین کو اقوام متحدہ کی مکمل رکنیت دینے کی حمایت کردی

اقوام متحدہ سلامتی کونسل کا غزہ کی صورتحال کے...

یکم اپریل سے بھارت میں کیا تبدیلی آ رہی ہے؟

بھارت میں یکم اپریل سے نئے مالی سال کا آغاز ہو رہا ہے اور بھارتی حکومت نے رقم سے متعلق 6 اہم تبدیلیوں کا فیصلہ کیا ہے جس سے عوام بھی متاثر ہوں گے۔

غیر ملکی میڈیا کے مطابق بھارتی حکومت نے یکم اپریل سے شروع ہونے والے نئے مالی سال میں

 یکم اپریل سے نئے مالی سال کا آغاز ہو رہا ہے اور پیسے سے متعلق 6 اہم تبدیلیاں واقع ہوں گی، جس کا براہ راست اثر آپ کی جیب پر پڑ سکتا ہے۔ نیوز پورٹل ’آج تک‘ پر شائع رپورٹ کے مطابق ان بڑی تبدیلیوں میں

 کریڈٹ کارڈ اور این پی ایس سمیت معیشت کے حوالے  سے کئی اہم تبدیلیاں کرنے کا فیصلہ کیا ہے اور یہ تبدیلیاں عوام کی سرمایہ کاری اور اخراجات کو متاثر کر سکتی ہیں۔

بھارتی حکومت جو سب سے بڑی تبدیلی کرنے جا رہی ہے وہ نیشنل پنشن اسکیم ہے۔

پنشن فنڈ ریگولیٹری اینڈ ڈیولپمنٹ اتھارٹی (پی ایف آر ڈی اے) نے قومی پنشن سسٹم (این پی ایس) کو مزید محفوظ بنانے کے لیے آدھار پر مبنی دو مراحل کا تصدیقی نظام متعارف (آدھار بیسٹ ٹو اسٹیپ اتھنٹیکیشن سسٹم) کرایا ہے۔ یہ سسٹم تمام پاس ورڈ بیس این پی ایس صارفین کے لیے ہوگا، جو یکم اپریل سے لاگو ہوگا۔ پی ایف آر ڈی اے نے اس سلسلے میں 15 مارچ کو نوٹیفکیشن جاری کیا تھا۔

ملک بھر میں ایل پی جی سلنڈر کی قیمت ہر مہینے کی پہلی تاریخ کو تبدیل ہوتی ہے۔ یکم اپریل کو کمرشل اور گھریلو گیس سلنڈر کی قیمت میں تبدیلی ہو سکتی ہے۔ تاہم لوک سبھا انتخابات کے درمیان ان قیمتوں میں تبدیلی کا امکان بہت کم ظاہر کیا جا رہا ہے۔

بینکوں کے کریڈٹ کارڈز میں بھی ایک اہم تبدیلی ہونے جا رہی ہے اور رپورٹ کے مطابق ایس بی آئی کارڈ نے اعلان کیا ہے کہ یکم اپریل 2024 سے کچھ کریڈٹ کارڈوں کے لیے کرایہ کی ادائیگی کے لین دین پر ریوارڈ پوائنٹس کی وصولی بند کر دی جائے گی۔ جن کارڈوں کے لیے یہ تبدیلی کی گئی ہے وہ اورم، ایس بی آئی کارڈ ایلیٹ، ایس بی آئی کارڈ ایلیٹ ایڈوانٹج، ایس بی آئی کارڈ پلس اور امپلی کلک ایس بی آٗی کارڈ شامل ہیں۔

یس بینک نے کہا ہے کہ جو صارفین کریڈٹ کارڈ سے ایک کیلنڈر سہ مارہی کے دوران 10 ہزار یا اس سے زیادہ خرچ کرتے ہیں تو ان کے لیے کمپلیمنٹری ڈومیسٹک لاؤنج ایکسس دستیاب ہوگا۔ وہیں، اگر آپ آئی سی آئی سی آئی بینک کریڈٹ کارڈ کے تحت ایک سہ ماہی میں 35 ہزار روپے یا اس سے زیادہ خرچ کرتے ہیں، تو آپ کو ایئرپورٹ لاؤنج تک رسائی کی سہولت ملے گی۔ یہ ضابطہ یکم اپریل سے نافذ العمل ہوگا۔ اس کے علاوہ، ایکسس بینک کے کریڈٹ کارڈز پر ایندھن، انشورنس اور سونے پر خرچ کرنے پر ریوارڈ پوائنٹس نہیں دیے جائیں گے، اس کا اطلاق 20 اپریل سے ہوگا۔

اولا منی نے اعلان کیا کہ وہ یکم اپریل 2024 سے ہر ماہ 10000 روپے کی زیادہ سے زیادہ والیٹ لوڈ کی پابندی کے ساتھ چھوٹے پی پی آئی (پری پیڈ پیمنٹ انسٹرومنٹ) والیٹ سروسز پر مکمل طور پر سوئچ کر رہا ہے۔ دوسری جانب وہ صارفین جو وائی سی کو 31 مارچ تک اپ ڈیٹ نہیں کریں گے تو انہیں یکم اپریل سے فاسٹیگ استعمال کرنے میں پریشانی ہو سکتی ہے۔

Comments

- Advertisement -