The news is by your side.

Advertisement

ملیریا کی ویکسین تیاری : امریکی محققین کو بڑی کامیابی مل گئی

ملیریا کا مرض مچھروں کی وجہ سے پھیلتا ہے اور اس سے ہر سال دو سو ملین سے زائد افراد متاثر ہوتے ہیں۔اس مرض پر قابو پانے کیلئے ملیریا کی حوصلہ افزا نتائج کی حامل ویکسین کی تیاری میں امریکی محققین نے اہم کردار ادا کیا ہے۔

ملیریا سے ہر سال چار لاکھ سے زائد افراد ہلاک ہو جاتے ہیں اور اِن میں سے اکثریت 5 سال سے کم عمر کے بچوں کی ہوتی ہے۔ امریکی اور دیگر محققین کی جانب سے تیار کی جانے والی حوصلہ افزا نتائج کی حامل ایک مؤثر ویکسین کی وجہ سے ممکن ہے کہ یہ صورت حال جلد ہی تبدیل ہو جائے۔

ملیریا مچھروں کی وجہ سے پھیلتا ہے اور اس سے ہر سال دو سو ملین سے زائد افراد متاثر ہوتے ہیں۔

طبی جریدے دی لانسیٹ میں 15 مئی کو شائع ہونے والی ایک تحقیق کے مطابق، آر 21 نامی یہ نئی ویکسین 5 سے 17 ماہ کی عمر کے بچوں کو ملیریا سے بچانے میں 77 فیصد مؤثر ثابت ہوئی ہے۔

اس تحقیق کے شریک مصنف، آکسفورڈ یونیورستی کے ایڈرین ہل کہتے ہیں، “یہ اہم نتائج اس ویکسین سے وابستہ ہماری اونچی توقعات کی تائید کرتے ہیں۔” انہوں نے بتایا کہ یہ نتائج 2030ء تک ملیریا کے خلاف عالمی ادارہ صحت کی تنظیم کے 75 فیصد مؤثر ویکسین کی تیاری کے ہدف (پی ڈی ایف، 2 ایم بی) کو پورا کرنے کی سمت میں ایک اہم قدم ہیں۔ اس سے پہلے ٹیسٹ کی گئی مؤثر ترین ویکسین محض 56 فیصد مؤثر ہے۔

امریکہ، برطانیہ، برکینا فاسو، بھارت اور کینیا کے محققین نے نئی ویکسین تیار کی اور اسے ٹیسٹ کیا۔ ہسپتالوں اور کلینکوں میں کیے گئے آزمائشی تجربات کے حوصلہ افزا نتائج برکینا فاسو میں کیے گئے اور مزید آزمائشی تجربات جاری ہیں۔ اگر اس ویکسین کو اجازت مل گئی تو “ دا سیرم انسٹی ٹیوٹ آف انڈیا” نامی بھارتی ادارہ ہر برس اس کی 200 ملین خوراکیں فراہم کرنے پر راضی ہے۔

آر 21 ویکسین اُن مچھروں کو نشانہ بناتی ہے جو ملیریا کا سبب بنتے ہیں اور اس میں گیدرز برگ، میری لینڈ کے نووا ویکس کا (جسمانی) مدافعت کو مضبوط بنانے کا نظام بھی شامل ہے۔

یو ایس ایڈ کی عالمی صحت کی رسد کا سلسلہ (@GHSupplyChain) 2 جون 2021

ملیریا کے خلاف امریکی حکومت کی جنگ عالمی صحت سے جڑے اِس کی اُس وابستگی کا ایک حصہ ہے جس میں آیڈز کا صدارتی ہنگامی پروگرام اور کووڈ-19 کے خلاف جنگ بھی شامل ہے۔

صرف ملیریا کے صدارتی پروگرام کے تحت مندرجہ ذیل کام کیے گئے۔

ملیریا کے پھیلاؤ کو روکنے میں مدد کے لیے 2004ء سے لے کر اب تک دو ارب سے زائد مچھر دانیاں تقسیم کی گئیں۔2000ء سے لے کر اب تک ملیریا سے ایک ارب سے زائد افراد کو بچایا گیا۔ امریکہ کے بیماریوں پر قابو پانے اور روک تھام کے مراکز کے مطابق ستر لاکھ سے زائد انسانی جانوں کو بچانے میں مدد کی گئی۔

Comments

یہ بھی پڑھیں