The news is by your side.

Advertisement

امریکہ بھرمیں اسلحےسے متعلق قانون سازی کے لیے مظاہرے

واشنگٹن : امریکہ بھر میں اسلحے سے متعلق قانون سازی کے لیے لاکھوں افراد سڑکوں پرنکل آئے، مظاہرین نے پلے کارڈ اٹھا رکھے تھے جن پر لکھا تھا ’اسلحہ نہیں، بچوں کو بچاؤ، اور کیا اب میری باری ہے؟‘۔

تفصیلات کے امریکہ میں اسلحے پر زیادہ سخت کنٹرول کے حوالے سے واشنگٹن، شکاگو، بوسٹن، نیویارک سمیت دیگر ریاستوں میں اسکولز، کالجز، یونیورسٹیوں کے طالب علموں نے مظاہرے کیے۔

مظاہرین نے کانگریس سے اسلحے کی فروخت کے حوالے سے قانون سازی کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا کہ اسکولوں، کالجزمیں اسٹوڈنس کے تحفظ کے لیے فوری اقدامات کیے جائیں۔

لاکھوں مظاہرین نے اسکولوں میں اساتذہ کو مسلح کرنے کی پالیسی کی پرزور مخالفت کرتے ہوئے کہا کہ سیاست دان ذاتی مفادات کے لیے نوجوانوں کی جانوں سے کھیل رہے ہیں۔

دوسری جانب امریکہ بھر میں مظاہروں پرترجمان وائٹ ہاؤس کا کہنا ہے کہ حقوق کے لیے نکلنے والے مظاہرین کوقدرکی نگاہ سے دیکھتے ہیں۔

ترجمان وائٹ ہاؤس کے مطابق بچوں کی زندگیاں محفوظ بنانا امریکی صدرٹرمپ کی پہلی ترجیح ہے جبکہ صدر ٹرمپ اسلحے کی فروخت پرقانون سازی کے لیے مشاورت کررہے ہیں۔

خیال رہے کہ 20 مارچ کو امریکی ریاست میری لینڈ میں 17 سالہ حملہ آور نے خود کار اسحلے سے گریٹ ملز ہائی اسکول میں گھس کر فائرنگ کردی تھی جس کے نتیجے میں دو طالب علم زخمی ہوگئے تھے۔


فلوریڈا کے ہائی اسکول میں فائرنگ، 17 افراد ہلاک


یاد رہے کہ گزشتہ ماہ 15 فروری کو امریکی ریاست فلوریڈا کے ہائی اسکول میں فائرنگ سے 17 افراد ہلاک اور درجن بھر سے زائد زخمی ہوگئے تھے۔ پولیس نے حملہ آور کو گرفتار کرلیا تھا۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں۔ مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہچانے کے لیے سوشل میڈیا پر شیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں