The news is by your side.

واقعے کو سیاسی رنگ دینے کی کوشش نہ کی جائے، مریم اورنگزیب

اسلام آباد : وفاقی وزیر اطلاعات مریم اورنگزیب نے کہا ہے کہ لانگ مارچ میں فائرنگ کے واقعے کی سختی سے مذمت کرتی ہوں، قائمہ کمیٹی کے چیئرمین فیصل جاوید بھی زخمی ہوئے ہیں۔

مریم اورنگزیب نے کہا کہ واقعے کو سیاسی رنگ دینے کی کوشش نہ کی جائے، انتہائی افسوسناک واقعہ ہے جس کی جتنی مذمت کی جائے کم ہے، پنجاب پولیس،انتظامیہ،انٹیلی جنس تحقیقات کرکے حقائق سامنے لائیں۔

وفاقی وزیر اطلاعات کا کہنا تھا کہ یہ واقعہ پنجاب حکومت کی حدود میں ہوا ہے، وزیر اعظم شہباز شریف نے ابتدائی رپورٹ بھی طلب کرلی ہے، قیاس آرائیاں نہیں ہونی چاہئیں،یہ حساس معاملہ ہے۔

انہوں نے کہا کہ وزیرداخلہ رانا ثناءاللہ پنجاب حکومت، آئی جی، اور چیف سیکریٹری سے رابطے میں ہیں، پنجاب حکومت جس طرح کا تعاون چاہے، وفاق فراہم کرے گا، ہم پنجاب حکومت کی رپورٹ کاانتظار کررہے ہیں۔

مریم اورنگزیب کا کہنا تھا کہ جیسے ہی کوئی مصدقہ اطلاع موصول ہوتی ہے میڈیا کے ساتھ شیئر کی جائے گی، سیاسی میدان خونی میدان نہیں بننےچاہئیں، پنجاب حکومت کرائم سین کو فوری سیل کرے۔

ان کا کہنا تھا کہ کرائم سین سے ہی تفتیش اور تحقیقات کا آغاز ہوگا، غیرذمہ دارانہ بیانات سے گریز کیا جائے، پنجاب پولیس کی جانب سے کرائم سین کو سیل نہیں کیا جارہا۔

وفاقی وزیر نے کہا کہ لانگ مارچ وزیراعلیٰ پنجاب کے حلقے میں تھا انہیں چاہیے کہ فوری تحقیقات کرائیں، ایسے بیانات سے گریز کیا جائے جس سے انتشار میں اضافہ ہو۔

مختلف سیاسی و مذہبی رہنماؤں کا واقعے پر اظہار مذمت 

علاوہ ازیں سراج الحق، اخترمینگل، راجہ پرویز اشرف اور ڈپٹی اسپیکر زاہد اکرم درانی اور دیگر سیاسی رہنماؤں کی جانب سے چیئرمین پی ٹی آئی عمران خان پر فائرنگ کی مذمت کی گئی ہے۔

امیر جماعت اسلامی سراج الحق نے پی ٹی آئی چیئرمین عمران خان پر حملے کو انتہائی قابل مذمت قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ گولی اور گالی کی سیاست مسترد کرتے ہیں۔

سراج الحق نے کہا کہ افسوس ناک واقعے کی فوری تحقیقات کی جائیں، عمران خان اور ان کے ساتھیوں کے زخمی ہونے پر دلی رنج اور تشویش ہے۔

انہوں نے کہا کہ عمران خان اور دیگر رہنماؤں کی جلد صحت یابی کے لیے دعا گو ہوں، سیاست کو لاٹھی، گولی سے پاک نہ کیا گیا تو حالات مزید گھمبیر ہوں گے۔

سرداراخترمینگل کا کہنا تھا کہ عمران خان پر فائرنگ کی مذمت کرتے ہیں واقعہ افسوسناک ہے، بات چیت کے دروازے بند کردیئے جاتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ بیلٹ کی بجائے بلٹ پر یقین رکھا جاتا ہے، عوام کی آواز کو ایک کان سے سن کر دوسرے سے نکال دیا جاتا ہے۔

اسپیکر و ڈپٹی اسپیکر قومی اسمبلی راجہ پرویز اشرف اور زاہد اکرم درانی نے کنٹینر پر فائرنگ کی مذمت کرتے ہوئے کہا کہ پیش آنے والا واقعہ انتہائی افسوس ناک ہے، انہوں نے چیئرمین پی ٹی آئی عمران خان اور دیگر رہنماؤں کے زخمی ہونے پر دکھ کا اظہار کیا۔

اس کے علاوہ مقبوضہ کشمیر کی سابق وزیر اعلیٰ محبوبہ مفتی نے فائرنگ سے عمران خان کے زخمی ہونے کے واقعے پر اظہار مذمت کیا ہے۔ سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر اپنے جاری بیان میں محبوبہ مفتی نے کہا ہے کہ عمران خان پر بزدلانہ حملے پر اظہار مذمت کرتی ہوں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں