The news is by your side.

Advertisement

چھتیس افراد شہید کردیے، ظالموں ماتم تو کرنے دو، میر واعظ عمرفاروق

سری نگر: حریت رہنما میر واعظ عمر فاروق نے کہا ہے کہ بھارتی افواج نوجوانوں پر گولیاں چلانے سے باز رہے، 35 کشمیریوں کو شہید کردیا گیا جس کی وجہ سے نوجوانوں میں اشتعال پیدا ہوگیا ہے اور اب ماتم بھی نہیں کرنے دیا جارہا۔

تفصیلات کے مطابق کشمیر میں جاری بھارتی افواج کے مظالم میں بتدریج اضافہ دیکھنے میں آرہا ہے، آج نماز جمعہ کی ادائیگی سے قبل حریت رہنما میر واعظ عمر فاروق کو بھارتی افواج کی جانب سے اُن کی رہائش گاہ پر نظر بند کردیا گیا۔

اس موقع پر کشمیری نوجوانوں کی بڑی تعداد نے حریت رہنما کی رہائش گاہ کے باہر بھارتی افواج کے خلاف احتجاج کیا اور شدید نعرے بازی کی، نوجوانوں کی جانب سے ’’ہم کیا چاہتے، آزادی کے نعرے لگائے گئے‘‘۔

رہائش گاہ کے باہر جمع ہونے والے نوجوانوں سے خطاب کرتے ہوئے میرواعظ عمر فاروق نے بھارتی افواج کو تنبیہ کی کہ وہ نوجوانوں پر گولیاں چلانے سے باز رہے، ہمارے 35 افراد مارے گیے ہیں نوجوان اُس ظلم کے خلاف سراپا احتجاج بنے ہوئے ہیں۔

میر واعظ نے بھارتی افواج کو متنبہ کیا کہ ’’اگر انہوں نے کشمیری نوجوانوں پر مظالم کا سلسلہ بند نہیں کیا تو صورتحال سنگین ہوجائے گی، نوجوان مارے گیے افراد کے غم میں ماتم کررہے ہیں مگر بھارتی افواج ہم سے اُس کا حق بھی چھیننا چاہتی ہے‘‘۔

واضح رہے حزب المجاہدین کے کمانڈر برہان وانی کی شہادت کے بعد سے بھارتی افواج کی جانب سے کشمیریوں پر  نہ ختم ہونے والے مظالم کا سلسلہ جاری ہے جس میں اب تک 36 افراد جاں بحق اور سیکڑوں شدید زخمی ہوئے ہیں۔ اسپتال حکام نے دعویٰ کیا ہے کہ زخمیوں میں سے بیشتر افراد کے اعضا ناکارہ ہوچکے ہیں اور کئی نوجوانوں کی آنکھیں ضائع ہوگئیں۔

دوسری جانب حریت رہنماؤں نے کہا ہے کہ بھارتی افواج مظاہرین پر مہلک ہتھیار استعمال کررہی ہے جس کے باعث سیکٹروں مظاہرین جاں بحق اور زخمی ہوئے ہیں۔

 

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں