The news is by your side.

Advertisement

ہوسکتا ہے آئندہ حکومت میری ہو! ٹرمپ کا کرونا ریلیف بل پر دستخط کرنے سے انکار

واشنگٹن : صدر ٹرمپ نے 900 ارب ڈالرز کے کرونا ریلیف بل پر دستخط کرنے سے انکار کرتے ہوئے کہاکہ بل میں غیر ضروری اور فضول چیزیں شامل ہیں۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کی رپورٹ کے مطابق امریکی حکمران جماعت ری پبلکن اور اپوزیشن جماعت ڈیموکریٹ پارٹی کی جانب سے بل منظور کیے جانے کے بعد کانگریس نے صدر کے دستخط کےلیے بل وائٹ ہاؤس بھجوایا تھا، جس پر ٹرمپ نے دستخط نہ کرنے کا اعلان کردیا۔

ڈونلڈ ٹرمپ کا کہنا تھا کہ بل میں غیر ضروری، فضول چیزیں شامل کی گئی ہیں جبکہ کرونا کے حوالے سے کچھ شامل نہیں۔

صدر ٹرمپ نے ہر شہری کےلیے رقم 600 سے بڑھا کر 2000 ڈالر کرنے کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا کہ کانگریس بل میں ترامیم کرکے دوبارہ وائٹ ہاؤس بھجوائے، اگر ترمیم نہ کی گئیں تو یہ بل آئندہ حکومت ہی منظور کرے گی۔

بل کانگریس کو واپس لوٹاتے ہوئے ٹرمپ نے مضحکہ خیز دعویٰ کیا کہ ہوسکتا ہے آئندہ حکومت میں میں ہی ہوں۔

انہوں نے کہا کہ یقین ہے کسی کانگرنس رکن نے پانچ ہزار صفحات پر مشتمل بل نہیں پڑھا ہوگا، کیونکہ بل میں غیر قانونی طور پر امریکا آنے والوں کےلیے 1800 ڈالر فی کس رکھے گئے ہیں اور یہ رقم امریکی شہریوں کو ملنے والی رقم سے بھی زیادہ ہے۔

صدر ٹرمپ نے کہا کہ امریکی شہریوں کےلیے صرف چھ ڈالرز کی رقم فی کس مختص کی گئی جبکہ چھوٹے کاروباروں کو بھی مناسب رقم نہیں دی جارہی۔

ان کا کہنا تھا کہ بل کی مد میں امدادی رقوم غیر قانونی طور پر امریکا آنے والوں کو بھی دی جائے گی، کانگرنس بیرون ممالک میں اپنے مفادات کےلیے بے پناہ رقوم خرچ کرتی ہے جبکہ امریکیوں کےلیے انتہائی کم رقم منظور کرنا چاہتی ہے حالانکہ کرونا وبا چین کی غلطی ہے امریکیوں کی نہیں۔

امریکی صدر نے کہا کہ کرونا ریلیف بل میں کمبوڈیا کےلیے 85.5 ملین ڈالرز، پاکستان میں جمہوری پروگرامز کےلیے 25 ملین ڈالرز، برما کےلیے 134 ملین مختص کیےگئے جبکہ مصر اور اسکی فوج کےلیے 1.3 ارب ڈالرز کی رقم مختص کی گئی ہے۔

صدر ٹرمپ نے کہا کہ مصر ہماری دی ہوئی رقم سے روس سے ہتھیار خریدے گا۔

ڈونلڈ ٹرمپ کا کہنا تھا کہ 505 ملین ڈالرز کوسٹاریکا، گواٹمالا، ہنڈورس، پاناما دیگر کی سیکیورٹی کیلئے ہیں، 40 ملین ڈالرز واشنگٹن میں کینیڈی سینٹر کےلیے مختص کیےگئے ہیں اور کرونا ریلیف بل میں 153 ملین نیشنل گیلری آف آرٹس کےلیے رکھے گئے۔

انہوں نے کہا کہ کرونا ریلیف بل میں سات ملین ڈالرز مچھلیوں کی افزائش کےلیے رکھے گئے، 2.5 ملین ڈالرز مچھلیوں کی تعداد کا اندازہ لگانے کےلیے رکھے گئے ، 3 ملین پولٹری پروڈکشن ٹیکنالوجی کےلیے مختص کیے گئے اور 560 ملین ڈالرز ایف بی آئی میں تعمیرات کےلیے مختص کیے گئے ہیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں