The news is by your side.

Advertisement

روسی پارلیمنٹ نے میدویدیف کی بطور وزیر اعظم نامزدگی کی توثیق کردی

ماسکو: روسی صدر ولادی میر پیوٹن کا میدویدیف کو بطور وزیر اعظم نامزد کرنے کے بعد اب روسی پارلیمنٹ نے بطور وزیر اعظم میدویدیف کی نامزدگی کی توثیق کردی ہے۔

تفصیلات کے مطابق گذشتہ روز بطور روسی صدر چوتھی مرتبہ عہدے کا حلف اٹھانے والے ولادی میر پیوٹن نے ایک بار پھر میدویدیف کو بطور وزیر اعظم نامزد کیا تھا، جس کے بعد آج ان کی نامزدگی کی روسی پارلیمان نے اکثریت رائے سے توثیق کر دی ہے۔

حلف برداری کی تقریب، ولادی میر پیوٹن نے چوتھی مرتبہ بطور روسی صدر حلف اٹھا لیا

روسی پارلیمنٹ میں میدویدیف کی نامزدگی کے حق میں 374 جبکہ مخالفت میں 56 ارکان پارلیمان نے اپنی رائے دی، خیال رہے کہ میدویدیف 2012 سے وزیر اعظم کے عہدے پر فائز ہیں، جن کی پیشہ ورانہ خدمات کی روسی صدر ہمیشہ تعریف کرتے آئے ہیں۔

یاد رہے کہ گذشتہ دنوں صدارتی الیکشن میں ولادی میر پیوٹن چوتھی بار واضح برتری کے ساتھ صدر منتخب ہوئے تھے، انھوں نے الیکشن میں 74 فیصد ووٹ حاصل کیے اور اس جیت کے بعد وہ مزید 6 سال تک روس کے صدر کی حیثیت سے اپنی ذمہ داریاں نبھائیں گے۔

ولادی میر پیوٹن چوتھی بار روس کے صدر منتخب

خیال رہے کہ گذشتہ روز روسی صدر ولادی میر پیوٹن نے چوتھی مرتبہ بطور روسی صدر حلف اٹھایا، اس موقع پر حلف برداری کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے روسی صدر نے ملک کے لیے بہتر خدمات کے عزم کا اظہار کیا، ان کا کہنا تھا کہ میری زندگی کا مقصد روس کی ترقی ہے، ہم خطے کو عالمی سطح پر مزید مضبوط بنانے کے لیے اقدامات کر رہے ہیں، خیال رہے کہ ان کی اس تقریب حلف برداری میں تقریباً پانچ ہزار مہمان مدعو کیے گئے تھے۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں، مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کے لیے سوشل میڈیا پر شیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں