The news is by your side.

Advertisement

محبوبہ مفتی کی اضافی بھارتی فوجی اہل کار بھیجنے کی مذمت

سری نگر: مقبوضہ جموں و کشمیر کی سابق وزیر اعلیٰ محبوبہ مفتی نے بھارت کی جانب سے وادی میں اضافی بھارتی فوجی اہل کار بھیجنے کے اعلان کی مذمت کی ہے۔

تفصیلات کے مطابق بھارت نے اعلان کیا ہے کہ وہ مقبوضہ وادی میں مزید 10 ہزار فوجی بھیج رہا ہے، محبوبہ مفتی نے کہا کہ بھارت کی طرف یہ اعلان قابل مذمت ہے۔

کشمیری میڈیا کے مطابق محبوبہ مفتی کا کہنا تھا کہ اضافی فوجیوں کی تعیناتی سے عوام میں خوف و ہراس بڑھے گا، کشمیر سیاسی مسئلہ ہے فوجی طریقے سے حل نہیں ہو سکتا۔

محبوبہ مفتی نے مزید کہا کہ بھارت کو کشمیر سے متعلق پالیسی دوبارہ بنانے کی ضرورت ہے۔

خیال رہے کہ مودی سرکار نے مقبوضہ کشمیر میں فوری طور پر مزید دس ہزار فوجی تعینات کرنے کا اعلان کیا ہے، اعلان کے بعد کمپنیاں روانہ کرنے کے احکامات بھی جاری کر دیے گئے ہیں۔

یہ بھی پڑھیں:  بھارت کا مقبوضہ کشمیر میں مزید دس ہزار فوجی تعینات کرنے کا اعلان

بھارتی وزارت داخلہ کی جانب سے جاری نوٹیفکیشن میں کہا گیا کہ وادی میں انٹیلی جنس کو مضبوط کرنے کے لیے فورسز تعینات کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔

جن کمپنیوں کو مقبوضہ کشمیر میں تعیناتی کے احکامات جاری کیے گئے ہیں ان میں سی آر پی ایف کی 50 کمپنیاں، بی ایس ایف کی 10، ایس ایس بی کی 30 اور آئی ٹی بی کی 10 کمپنیاں شامل ہیں۔

خیال رہے یہ احکامات امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی اس پیش کش کے بعد جاری کیے گئے ہیں جس میں انھوں نے کہا تھا کہ وہ پاکستان اور بھارت کے درمیان کشمیر تنازع پر ثالثی کے لیے تیار ہیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں