The news is by your side.

Advertisement

حکومت نے آئی ایم ایف کا بڑا مطالبہ تسلیم کرلیا

واشنگٹن: عالمی مالیاتی ادارے (آئی ایم ایف) اور وزیرخزانہ مفتاح اسماعیل کے درمیان ہونے والے مذاکرات میں بجلی اور پٹرول پر سبسڈی مرحلہ وار ختم کرنے پر اتفاق ہوگیا ہے۔

ذرائع کے مطابق وزیرخزانہ مفتاح اسماعیل نے واشنگٹن میں آئی ایم ایف وفد سے ملاقات کی جس میں وزیرخزانہ نے آئی ایم ایف پروگرام جاری رکھنےپراتفاق کیا۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ وزیر خزانہ نے آئی ایم ایف کی ہم ترین شرط پر سرینڈر کرتے ہوئے بجلی اور پٹرول کی سبسڈی مرحلہ وار ختم کرنے کی یقین دہانی کرادی ہے۔

ملاقات میں آئی ایم ایف نے کہا کہ پاکستان غریب طبقے کےلیے سبسڈیز جاری رکھے، عالمی مالیاتی ادارے کو انکم سپورٹ پروگرام پر کوئی اعتراض نہیں اس کے علاوہ صحت کارڈ کی سہولت پر بھی آئی ایم ایف کو کوئی پریشانی نہیں ہے۔

یہ بھی پڑھیں: کرنٹ اکاؤنٹ خسارہ 1 ارب 2 کروڑ ڈالرز سے متجاوز

ذرائع کا کہنا ہے کہ وزیر خزانہ کی جانب سے اسٹیٹ بینک کی خود مختاری کیلئےکوششیں کی جائیں گی۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ پاکستان اور آئی ایم ایف نے تکنیکی مذاکرات منگل سے شروع کرنے پر اتفاق کیا ہے،ٹیکنیکل لیول مذاکرات کے بعد ڈیٹا سامنے آئے گا، تکنیکی مذاکرات کے بعد آئی ایم ایف مشن پاکستان کا دورہ کرے گا۔

واضح رہے کہ آئی ایم ایف کا توسیع شدہ پروگرام ستمبر میں ختم ہو رہا ہے، پاکستان نے آئی ایم ایف کا توسیع شدہ پروگرام ایک سال بڑھانے کی درخواست کی ہے جس پر آئی ایم ایف پروگرام کی ایک سال کے لیے توسیع کرنے پر رضامند ہو گیا ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں