The news is by your side.

مفتاح اسماعیل سیلاب زدگان کا ذکر کرتے ہوئے آبدیدہ ہوگئے

لاہور: وفاقی وزیر برائے خزانہ مفتاح اسماعیل سیلاب زدگان کا ذکر کرتے ہوئے آبدیدہ ہوگئے۔

اے آر وائی نیوز کے مطابق لاہور میں نیوز کانفرنس کرتے ہوئے وزیر خزانہ مفتاح اسماعیل سیلاب سے تباہی کا ذکر کرتے ہوئے جذبات پر قابو نہ رکھ سکے اور آبدیدہ ہوگئے۔

انہوں نے بتایا کہ سیلاب سے سندھ کی مکمل کپاس تباہ ہو گئی ہے 18.5 بلین ڈالر کا نقصان ہوگیا ہے 17 لاکھ کے قریب مکان تباہ ہوگئے اور 10 لاکھ جانور ہلاک ہوچکے ہیں۔

وزیر خزانہ نے کہا کہ جو سیلاب سے نقصان ہوا وہ حکومت پاکستان برداشت نہیں کرسکتی ہے سیلاب سے تین کروڑ 30 لاکھ سے زائد لوگ متاثر ہوئے ہیں۔

ٹیکس سے متعلق مفتاح اسماعیل کا کہنا ہے کہ 51 فیصد پاکستان میں سروسز سے ٹیکس آتا ہے 2010 سے سرکولر ڈیٹ بڑھ رہا ہے 2500 ارب بجلی اور 1500 ارب کا گیس کا سرکولر ڈیٹ ہے۔

انہوں نے کہا کہ 660 ارب روپے ہم نے پیٹرول اور ڈیزل پر سبسڈی دی ہے اب سبسڈی دینا بند کی ہم ڈیزل کی قیمت سے 80 روپے سستا دے رہے تھے جبکہ 3.7 بلین ڈالر کا نیل جون میں منگوانا پڑا ہے۔

وزیر خزانہ نے بتایا کہ ڈیزل پر اس وقت صرف 7.5 روپے ٹیکس ہے جبکہ پٹرول میں 38 روپے ٹیکس ہے۔

انہوں نے کہا کہ امپورٹ کی ایل سیاں کھولنے کے ابھی حق میں نہیں ہوں میرے بیٹے کی مل کے لیے بھی ایل سی کھولنے کی اجازت نہیں دی۔

Comments

یہ بھی پڑھیں