The news is by your side.

Advertisement

مائیگرین کیا ہے ؟ اس پر کیسے قابو پایا جا سکتا ہے؟

مائیگرین کا شمار دردناک ترین بیماریوں میں ہوتا ہے، آدھے سر کے درد روز مرہ کے کاموں میں سستی اور زندگی میں اکتاہٹ کا سبب بنتا ہے لیکن مائیگرین کا آسان علاج کیا ہے اور اس پر کیسے قابو پایا جا سکتا ہے؟

دردِ شقیقہ کو صرف درد سمجھنا اب پرانی بات ہو چکی ہے جہاں عام طور پر سر درد کو برداشت کیا جا سکتا ہے وہیں دردِ شقیقہ بہت شدید ہوتا ہے اور بعض اوقات آپ کو شدید کمزوری کا شکار کر دیتا ہے اس بیماری کی کوئی حتمی وجہ اب تک سامنے نہیں آ سکی ہے۔

اے آر وائی نیوز کے پروگرام باخبر سویرا میں گفتگو کرتے ہوئے نیورو لوجسٹ ڈاکٹر عبدالمالک نے مائیگرین کے حوالے سے احتیاطی تدابیر اور علاج سے متعلق اہم مشوروں سے آگاہ کیا۔

ڈاکٹر عبدالمالک نے کہا کہ جدید دور کے امراض میں سے مائیگرین یا آدھے سر کا درد ایک تکلیف دہ بیماری ہے ،ہر تیسرا فرد کسی نہ کسی انداز میں مائیگرین کی علامات کی شکایت لیے پھرتا ہے۔

مرض کی علامات بتاتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ اس میں حساس قسم کی اعصابی علامات بھی نمو دار ہوتی ہیں مثلاً روشنیوں کے جھماکے،سیاہ دھبے بازؤوں اور ٹانگوں میں سوئیاں چبھنے والی بے چینی کا احساس، متلی، قے وغیرہ۔

ڈاکٹر عبدالمالک نے کہا کہ اس بیماری کا بلڈ پریشر سے کوئی تعلق نہیں، مختلف مریضوں میں مختلف علامات اور وجوہات ہوتی ہیں لیکن جو مشترکہ علامات ہیں ان میں آدھے سر کا درد متلی وغیرہ ہیں۔

بہت شدید درد کی صورت میں مریض کو فوری طور پر اپنے معالج سے مشورے کے بعد ہی کوئی دوا لینی چاہیے، عام سر درد کی دوا سے درد کی شدت تو شاید کم ہوجائے لیکن اس مرض سے چھٹکارا ممکن نہیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں