خلا میں ننھی منی تجرباتی لیبارٹری فعال -
The news is by your side.

Advertisement

خلا میں ننھی منی تجرباتی لیبارٹری فعال

زمین سے 500 کلو میٹر کے فاصلے پر گردش کرتی ایک ننھی منی لیبارٹری نے سائنسی تجربات شروع کردیے ہیں۔ یہ زمین پر کشش ثقل کی موجودگی میں کیے جانے والے تجربات کو بغیر کشش ثقل کے دہرائے گی۔

ایک چھوٹے سے سیٹلائٹ کے اندر نصب یہ لیبارٹری سوئٹزر لینڈ اور اسرائیل کی مشترکہ خلائی ایجنسی نے بنائی ہے اور حال ہی میں اپنا پہلا سائنسی تجربہ کامیابی سے مکمل کر چکی ہے۔

lab-3

ماہرین کا کہنا ہے کہ خلا میں کشش ثقل کی غیر موجودگی میں خلیے اور مالیکیول مختلف طریقے سے کام کرتے ہیں۔

ان کا کہنا ہے کہ اب زراعت سے لے کر طب تک، نئے سرے سے تجربات کیے جائیں گے جن پر کشش ثقل کا کوئی اثر نہیں ہوگا، ’اور یقیناً ہم اس سے نئی دریافتیں کر سکیں گے‘۔

مزید پڑھیں: خلا میں دانت کیسے برش کیے جاتے ہیں؟

اس تجربہ گاہ میں تجربات کے لیے سائنس دان زمین سے ڈیٹا اور ہدایات بھیجا کریں گے جس کے بعد یہ خود بخود تجربات انجام دے گی۔

تجربہ مکمل ہونے کے بعد اسی طریقہ کار سے نتائج کو زمین کی جانب بھیج دیا جائے گا جس کے بعد سائنس دان اس کا جائزہ لیں گے۔

lab-1

فی الحال اس تجربہ گاہ میں صرف چند تجربات کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے، تاہم سائنس دانوں کو امید ہے کہ اگلے برس وہ یہاں 150 سے زائد تجربات کر سکیں گے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں