spot_img

تازہ ترین

روسی صدر پیوٹن کی وزیراعظم شہباز شریف کو مبارکباد

روس کے صدر ولادیمیر پیوٹن نے شہباز شریف کو...

امریکا وزیراعظم شہباز شریف کیساتھ مشترکہ مفادات آگے بڑھانے کا خواہاں

واشنگٹن : امریکی محکمہ خارجہ کے ترجمان میتھو ملر...

وزیراعلیٰ کے پی آج اڈیالہ جیل میں بانی پی ٹی آئی سے ملاقات کریں گے

وزیراعلیٰ خیبر پختونخوا علی امین گنڈاپور آج اڈیالہ جیل...

الیکشن کمیشن نے سنی اتحاد کونسل کی مخصوص نشستوں کی درخواست مسترد کردی

اسلام آباد: الیکشن کمیشن نے سنی اتحاد کونسل کی...

شہباز شریف نے وزیراعظم کےعہدے کا حلف اٹھالیا

اسلام آباد : شہباز شریف نے وزیراعظم کےعہدے کا...

بھارت میں مشتعل ہجوم کا امام مسجد پر تشدد، پولیس کی روایتی بے حسی

نام نہاد جمہوریت کے دعویدار بھارت میں مشتعل ہجوم نے پیش امام کو پولیس اسٹیشن کے نزدیک بدترین تشدد کا نشانہ بنایا، جبکہ پولیس نے پیش امام کو ہی حراست میں لے لیا۔

بین الاقوامی خبر رساں ادارے کی رپورٹ کے مطابق بھارتی ریاست چھتیس گڑھ میں پولیس اسٹیشن کے نزدیک ہجوم نے امام مسجد کو مبینہ طور پر مذہبی جذبات مجروح کرنے پر تشدد کا نشانہ بنایا۔

غیرملکی میڈیا رپورٹ کے مطابق 24 جنوری کو مولانا اصغر علی اپنے گھر سے مقامی گاؤں کے مدرسے کے لیے گئے جہاں وہ تقریباً 2 سال سے پڑھا رہے ہیں۔ بچوں کو پڑھانے کے بعد مولانا اصغر علی دوپہر کے کھانے کے لیے گھر واپس آئے۔

مولانا اصغر علی بتایا کہ کھانا ابھی شروع ہی کیا تھا کہ مشتعل ہجوم گھر پہنچ گیا اور ساتھ چلنے کے لئے کہا گیا، میں نے جانے سے انکار کیا، تو زبردستی گھسیٹ کر گاڑی میں بٹھایا اور تھانے کے قریب لے جا کر شدید تشدد کیا گیا۔

غیرملکی میڈیا کا کہنا ہے کہ مولانا اصغر علی کو بتایا گیا ہے کہ انہیں ایک سابقہ مدرسے کے طالب علم کے واٹس ایپ اسٹیٹس کے باعث حراست میں لیا گیا ہے۔

غزہ مایوسی کا پریشر ککر بن چکا ہے، اقوام متحدہ

واضح رہے کہ بھارت میں اس قسم کے واقعات اب معمول بن چکے ہیں، مسلمانوں پر بھارت کی زمین تنگ کی جارہی ہے، مساجد کی مسماری، نہتے مسلمانوں پر تشدد کے واقعات مودی حکومت کی سرپرستی میں جاری ہیں۔

Comments

- Advertisement -