یو اے ای : جنسی ہراسگی کیس موبائل ٹیکنیشن کو قید کی سزا sexual harassment
The news is by your side.

Advertisement

یو اے ای : جنسی ہراسگی کیس موبائل ٹیکنیشن کو قید کی سزا

راس الخیمہ : متحدہ عرب امارات کی عدالت نے خاتون کو جنسی پر طور پر ہراساں کرنے کے جرم میں موبائل ٹیکنیشن کو 6 ماہ قید اور  ملک بدر کرنے کی سزا سنا دی.

تفصیلات کے مطابق متحدہ عرب امارات کی ریاست راس الخیمہ کی فوج داری عدالت نے جنسی ہراسگی کے الزام کے گرفتار موبائل ٹیکنیشن کو جرم ثابت ہونے پر قید کی وزا سناتے ہوئے جیل منتقل کرنے کا حکام دیا ہے۔

اماراتی میڈیا کا کہنا ہے کہ متاثرہ خاتون نے ملزم کو موبائل ٹھیک کرنے کے لیے دیا تھا تاہم ملزم نے موبائل موجود خاتون کی ذاتی تصاویر نکالنے کے بعد مدعی کو جنسی طور پر ہراساں کرنے کی کوشش کی تھی۔

عدالتی دستاویزات کے مطابق موبائل ٹیکنیشن کے خلاف رواں برس 22 جولائی کو راست الخیمہ کے علاقے مامورا پولیس اسٹیشن میں شکایت درج ہوئی تھی، جس میں خاتون نے مؤقف اختیار کیا تھا کہ ملزم نے میری مرضی کے خلاف مجھے پکڑا تھا۔

متاثرہ لڑکی نے عدالت کو بتایا کہ میری موبائل کی اسکرین خراب ہوگئی تھی جسے ٹھیک کرنے کے لیے میں اپنا موبائل مذکورہ شخص کو دیا تھا، ملزم نے موبائل معائنہ کرنے کا کہہ کر مجھ سے موبائل کا پاسپورڈ وصول کیا تھا لیکن اس نے پاسپورڈ حاصل کرنے کے لیے میری ذاتی تصاویر حاصل کی اور مجھے ہراساں کرنے کی کوشش کی۔

دوسری جانب ملزم کے وکیل نے خاتون کی جانب سے عائد کردہ الزامات کی تردید کرتے ہوئے کہا کہ خاتون نے میرے موکل پر بے بنیاد الزامات لگائے ہیں جبکہ مدعی نے موکل کے خلاف عدالت کو کسی قسم کے شواہد پیش نہیں کیے۔

ملزم کے وکیل نے عدالت کو بتایا کے میرے کا ہاتھ غلطی نے خاتون کے کندھے پر لگ گیا تھا تاہم انہوں اسی وقت کسٹمر سے اپنی غلطی پر معافی مانگ لی تھی، تاہم خاتون نے میرے موکل کو موبائل ٹھیک کروانے 100 درہم اجرت بھی ادا نہیں اور جنسی ہراسگی کی شکایت بھی درج کروائی۔

ملزم کے وکیل نے جنسی ہراسگی کیس کی سماعت کے دوران عدالت کو آگاہ کیا کہ خاتون نے ہراسگی کو دعویٰ کرنے کے چار گھنٹے بعد پولیس کو شکایت درج کروائی تھی۔

راس الخیمہ کی عدالت نے مدعی اور وکیل صفائی کے بیانات قلم بند کرنے کے بعد موبائل ٹیکنیشن پر جرم ثابت ہونے پر 6 ماہ قید کی سزا سناتے ہوئے ملک بدر کرنے کا حکم دیا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں