The news is by your side.

Advertisement

الیکشن میں فتح ملنے کے بعد مودی کابینہ سمیت مستعفیٰ

نئی دہلی: بھارت کے لوک سبھا (ایوان زیریں) کے انتخابی نتائج آنے کے بعد نریندر مودی نے کابینہ سمیت اپنے عہدے سے استعفیٰ دے دیا۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق بھارتی الیکشن کمیشن کی جانب سے حتمی نتائج کا اعلان کردیا گیا جس کے مطابق بھارتیہ جنتا پارٹی نے لوک سبھا کی 542 نشستوں میں سے 303 پر کامیابی حاصل کی۔ بی جے پی کی قیادت میں نیشنل ڈیموکریٹک الائنس (این ڈی اے) نے کُل 350 نشستیں حاصل کیں۔

بھارت میں حکومت بنانے کے لیے لوک سبھا کی 272 نشستیں درکار ہوتی ہیں، 1984 کے بعد یہ پہلا موقع ہے کہ کوئی بھی پارٹی بھاری اکثریت سے حکومت بنانے کی پوزیشن میں ہے۔

الیکشن کے حتمی نتائج آنے کے بعد نریندر مودی نے جمعے کی شام صدر مملکت رام ناتھ کووند سے اپنی کابینہ کے ہمراہ ملاقات کی اور اپنے استعفے پیش کیے کیونکہ اب نئے وزیراعظم کو 30 مئی کو دوبارہ حلف اٹھانا ہے۔

مزید پڑھیں: ایک بار پھر مودی سرکار، بھارتی انتخابات میں بی جے پی کی واضح برتری

رام ناتھ نے کابینہ کے استعفے منظور کرتے ہوئے مودی سے درخواست کی کہ وہ نگراں وزیراعظم کی حیثیت سے 30 مئی تک کام کریں جسے مودی نے تسلیم کرلیا اور اب وہ نگراں وزیراعظم کے عہدے پر کام کرتے رہیں گے۔

قبل ازیں نئی دہلی میں بھی کابینہ کا اجلاس ہوا جس میں 16ویں لوک سبھا کو تحلیل کرنے کی تجویز منظور کی گئی، بھارتی صدر کابینہ اراکین کے استعفیٰ منظور کرنے کے بعد کل یا پرسوں تک ایوان تحلیل کرنے کا اعلان کرتے ہوئے بی جے پی کو حکومت سازی کی دعوت دیں گے۔

یہ بھی پڑھیں: انتخابات میں شکست، کانگریس رہنما دل کا دورہ پڑنے سے چل بسے

بی جے پی کی جانب سے ابھی تک نئے وزیراعظم کا اعلان نہیں کیا گیا تاہم امکان ظاہر کیا جارہا ہے کہ نریندر مودی ہی 30 مئی کو بھارت کے نئے وزیراعظم کا حلف اٹھائیں گے کیونکہ وہی اس عہدے کے مضبوط امیدوار ہیں، حلف برداری سے قبل وہ اپنے حلقہ انتخاب اترپردیش اور گجرات کا بھی دورہ کریں گے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں