The news is by your side.

Advertisement

منکی پاکس مزید پھیل گیا : سیکڑوں کیسز رپورٹ، ڈبلیو ایچ او نے خبردار کردیا

جنیوا : دنیا کے مختلف ممالک میں اب تک منکی پاکس کے780 کیسز رپورٹ ہوچکے ہیں، زیادہ تر مریض یورپی ممالک میں سامنے آئے ہیں، ماہرین کے مطابق اس بیماری سے ہر شخص کو خطرہ ہوسکتا ہے۔

اس حوالے سے عالمی ادارہ صحت (ڈبلیو ایچ او) نے اپنی تازہ رپورٹ میں کہا ہے کہ 13 مئی سے 2 جون تک 27 غیر مقامی ممالک کے لوگوں میں منکی پاکس کے کم ازکم 780 کیسز کی نشاندہی ہوئی ہے۔

ڈبلیو ایچ او نے کہا کہ13 مئی اور 2 جون 2022 تک27 ممالک میں ڈبلیوایچ او کے ذریعہ منکی پاکس کے 780 کیسز کی تصدیق یا شناخت کی گئی ہے جو منکی پاکس وائرس کے لئے مقامی ممالک نہیں ہیں۔”

اس طرح، 29 مئی سے مزید 523 کیسز کی تصدیق ہوئی ہے، جب تنظیم نے257 تصدیق شدہ کیسز کے ساتھ وبائی صورتحال کے بارے میں اپنی آخری اپ ڈیٹ جاری کی تھی، نئے اعداد و شمار وائرس کے واقعات میں 203 فیصد اضافے کی نشاندہی کرتے ہیں۔

منکی پاکس، تصویر آئی اے این ایس

بیان میں کہا گیا ہے کہ "2 جون تک، غیر مقامی ممالک میں موجودہ منکی پاکس کے قہر سے منسلک کوئی موت نہیں ہوئی ہے، حالانکہ مقامی ممالک سے کیسز اور اموات کی اطلاع جاری ہے۔”

منکی پاکس کیا ہے؟
منکی پاکس دراصل ایک ایسا وائرس ہے جو بنیادی طور پر جانوروں سے انسانوں میں منتقل ہوتا ہے۔ منکی پاکس، وائرس کے ’پاکس وائری ڈائے‘ (Poxviridae) فیملی سے تعلق رکھتا ہے، اس فیملی کو مزید 2 ذیلی خاندانوں میں تقسیم کیا گیا ہے جن میں 22 پرجاتیاں ہیں اور مجموعی طور پر اس فیملی میں وائرس کی 83 اقسام ہیں۔

مزید پڑھیں : منکی پاکس کی ایک انسان سے دوسرے انسان میں منتقلی کیسے ؟ 

اس فیملی سے تعلق رکھنے والے وائرس میں "اسمال پاکس” یعنی چیچک بھی شامل ہے اور علامات میں قریب ترین ہونے کی وجہ سے منکی پاکس کو اس کا کزن بھی کہا جاتا ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں