بیلجئیم : مظاہرین کی وزیر اعظم ہاوس کی جانب پیش قدمی، 100 سے زائد گرفتار yellow vest belgium
The news is by your side.

Advertisement

بیلجئیم : مظاہرین کی وزیر اعظم ہاوس پیش قدمی، 100 سے زائد گرفتار

یورپ : فرانس میں پُر تشدد مظاہروں کے بعد یورپ کے دیگر ممالک میں بھی حکومت مخالف مظاہرے شروع ہوگئے، پولیس نے بیلجئیم میں حکومت مخالف احتجاج کرنے والے 100 افراد کو گرفتار کرلیا۔

تفصیلات کے مطابق فرانسیسی دارالحکومت سمیت ملک بھر میں ہونے والے حکومت مخالف مظاہرے اب یورپ کے دیگر ملکوں میں بھی پھیلنا شروع ہوگئے ہیں۔

گذشتہ دو تین روز سے بیلجئیم کے شہری روزنہ حکومت مخالف نعرے لگاتے ہوئے وزیراعظم ہاوس ی جانب پیش قدمی کرتے ہیں۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کا کہنا ہے کہ حکومت کے خلاف احتجاجی تحریک چلانے والے بیلجئیم دارالحکومت برسلز میں پولیس کی جانب سے لگائی گئی رکاوٹیں ہٹاتے ہوئے پولیس پر ٹوٹ پڑے۔

غیر ملکی میڈیا کا کہنا ہے کہ مشتعل مظاہرین نے وزیر اعظم جانے سے روکنے والے پولیس اہلکاروں پر پتھراؤں کیا جبکہ بوتلیں اور دیگر اشیاء بھی برسائیں، پولیس نے کارروائی کرتے ہوئے مظاہرین پر آنسو گیس کے شیل اور واٹر کینن کا آزادہ استعمال کیا گیا۔

برسلز پولیس نے اشتعال انگیزی کرنے والے 100 سے زائد مظاہرین کو حراست میں بھی لیا ہے۔

مزید پڑھیں : فرانس: پولیس نے سیکڑوں مشتعل مظاہرین کو حراست میں لے لیا

برسلز پولیس کا کہنا ہے کہ حکومت کے خلاف 400 سے زائد افراد نے گذشتہ روز احتجاجی مظاہروں میں شرکت کی۔

پولیس کا کہنا ہے کہ گرفتار مظاہرین کے قبضے سے آٹش گیر مادہ اور کپٹڑے برآمد ہوئے ہیں جسے یقیناً جھڑپوں کے دوران پولیس کے خلاف استعمال کیا جانا تھا۔

مزید پڑھیں : عوامی احتجاج ’عفریت‘ بن گیا ہے، فرانسیسی حکومت

برطانوی میڈیا کا کہنا ہے کہ بیلجئییم اور ہالینڈ میں حکومت مخالف احتجاج کی وجوہات واضح نہیں ہوسکیں ہیں اور دونوں ممالک میں پیٹرول کی قیمتیں بھی اپنی جگہ ہیں۔

تجزیہ کاروں کا کہنا ہے کہ ’یلو ویسٹ‘ تحریک کے مزید ملکوں میں پھیلنے کا امکان ہے، تجزیہ کاروں کا خیال رہے کہ اسنہ 2019 کے اوائل میں سویٹزرلینڈ میں بھی یورپی یونین سے علیحدگی کے لیے ریفرنڈم کروائے گا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں