The news is by your side.

Advertisement

ایم کیو ایم پاکستان نے راشن تقسیم کے معاملے پر سوالات اٹھا دیے

کراچی: شہر قائد میں لاک ڈاؤن کے دوران مستحقین میں راشن کی تقسیم کا معاملہ تاحال تنازع کا شکار ہے، ایم کیو ایم پاکستان نے اس سلسلے میں سندھ حکومت کی کارکردگی پر سوالات اٹھا دیے ہیں۔

اے آر وائی نیوز کے مطابق متحدہ قومی موومنٹ پاکستان کے کنوینر خالد مقبول صدیقی نے کہا ہے کہ سندھ میں راشن کی تقسیم پر بھی سیاست کی جا رہی ہے، کیا یہ وقت اپنے لوگوں کی مدد کا ہے یا سیاست کرنے کا؟

خالد مقبول صدیقی کا کہنا تھا کہ طے ہوا تھا کہ راشن کی تقسیم یونین کونسل کی سطح پر نمائندگان کے ذریعے ہوگی، لیکن صوبے میں راشن پیپلز پارٹی کے ہارے ہوئے نمائندے تقسیم کر رہے ہیں۔

کراچی میں غریب افراد میں راشن کی تقسیم کیسے ہوگی؟پلان تیار

ان کا کہنا تھا کہ کس گھر میں کتنے افراد ہیں، خرچہ کتنا ہے، کون مستحق ہے، یو سی سطح پر نمائندوں کے پاس ہر گھر کی یہ معلومات موجود ہوتی ہے، خدشہ ہے پی پی طرز عمل سے مستحقین میں راشن تقسیم نہیں ہو سکے گا، کرونا فنڈز کے نام پر خورد برد اور سیاست کی جا رہی ہے۔ خالد مقبول نے کہا کہ ایم کیو ایم کے بلدیاتی نمائندے اپنے طور پر شہر میں راشن تقسیم کر رہے ہیں اور خون کے عطیات جمع کر رہے ہیں، یہ کام بہتر طور پر بلدیاتی نمائندے ہی کر سکتے ہیں۔

خیال رہے کہ سندھ حکومت نے کراچی میں غریب افراد میں راشن کی تقسیم کا نظام وضع کر دیا ہے، کمشنر کراچی کے مطابق راشن یونین کونسل کی سطح پر تقسیم کیا جائے گا اور شام 5 سے 7 بجے یا پھر رات گئے گھروں کی دہلیز پر جا کر تقسیم ہوگا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں