ریاست مدینہ کے نام پر عوام کو دھوکہ دیا گیا، مولانا فضل الرحمان
The news is by your side.

Advertisement

ریاست مدینہ کے نام پر عوام کو دھوکہ دیا گیا، مولانا فضل الرحمان

پشاور: جمعیت علماء اسلام کے سربراہ مولانا فضل الرحمان کا کہنا ہے ریاست مدینہ کے نام پر عوام کو دھوکہ دیا گیا، حکومت مسئلہ کشمیر کو نظر انداز کرکے بھارت کے ساتھ پینگیں بڑھا رہی ‌ہے۔

تفصیلات کے مطابق جمعیت علماء اسلام کے سربراہ  مولانا فضل الرحمان نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا متحدہ مجلس عمل کی جنرل کونسل کا آج اجلاس ہوا،  اجلاس میں ملکی سیاسی صورتحال کا جائزہ لیا گیا، اے پی سی میں سیاسی جماعتوں کو بلانے سے متعلق فیصلہ نہیں کیا، موجودہ حکومت نے ملک کوبحرانوں کی طرف دھکیل دیا۔

فضل الرحمان کا کہنا تھا کہ کسی وزیراعظم نے ابتدائی بیان میں مقبوضہ کشمیر کو نظرانداز نہیں کیا، مقبوضہ کشمیر پاکستان کا مستقل مسئلہ ہے، حکومت نظرانداز کررہی ہے اور  بھارت کے ساتھ پینگیں بڑھا رہی ہے۔

انھوں نے کہا کہ چین کا اعتماد متاثر ہوا ہے ،بحال کیا جائے پاک چین دوستی پہلی باراقتصادی شراکت داری میں تبدیل ہوئی، سی پیک کا خاتمہ یا منصوبے میں تاخیر ملکی معیشت کیلئے ضرب کاری ہوگی۔

مولانا فضل الرحمان کا کہنا تھا کہ منی انتخابات میں بھی ایم ایم اے حصہ لے گی ختم نبوت،مدارس کی حیثیت سے متعلق اےپی سی کی جائے گی، آج کس طرح سےمدارس کی حیثیت ختم کرنےکی بات کی جارہی ہے۔

انھوں نے کہا کہ ریاست مدینہ کے نام پر عوام کو دھوکہ دیا گیا، جیسےسفارتی معاملات چلائےجارہے ہیں،کیا ان میں اسکی قابلیت ہے، ملک کبھی چندےسےنہیں چلاکرتے،یہ اقتصادی پالیسی کا مذاق ہے، بیرونی ممالک کی پالیسی پاکستانی معیشت کیلئے بہتر ثابت نہیں ہوسکتی۔

یاد رہے چندروز قبل مولانا فضل الرحمان نے حکومت کو جعلی قرار دیتے ہوئے کہا تھا تمام جماعتوں نے انتخابی نتائج پر تحفظات کا اظہار کیا اور اس انتخابات کے نتائج کو قبول نہیں کیا لہٰذا اب بھی وقت ہے الیکشن کمیشن اپنی ناکامی تسلیم کرے اور چیف الیکشن کمشنر استعفیٰ دے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں